The news is by your side.

Advertisement

سینیٹ ٹکٹ: بلوچستان کے بعد سندھ سے بھی آواز اٹھ گئی

سکھر: سینیٹ الیکشن کے لیے ٹکٹوں کی تقسیم کے سلسلے میں بلوچستان کے بعد سندھ سے بھی آواز اٹھنے لگی۔

اے آر وائی نیوز کے مطابق ٹکٹوں کی تقسیم پر پاکستان تحریک انصاف سندھ ریجن کے نمائندوں نے گورنر سندھ عمران اسماعیل کو خط لکھ کر اپنا احتجاج ریکارڈ کرا دیا ہے۔

خط میں کہا گیا ہے کہ ٹیکنو کریٹ کی سیٹ پر نامزد سیف اللہ ابڑو کو ٹکٹ دے کر غلط فیصلہ کیا گیا، سیف اللہ ابڑو پر کرپشن چارجز ہیں، اور ان کے خلاف نیب میں کیسز چل رہے ہیں۔

خط میں کہا گیا کہ سیف اللہ ابڑو پیپلز پارٹی کے لیے کام کرتے رہے ہیں، ایک متنازع شخص کو ٹکٹ دیا گیا تو بلدیاتی اور عام انتخابات سے دست بردار ہو جائیں گے۔

کپتان نے کارکنوں کی آواز سن لی، عبدالقادر کو ٹکٹ نہ دینے کا فیصلہ

خط کے متن میں کہا گیا ہے کہ سیف اللہ ابڑو پارٹی کے کئی طاقت ور لوگوں کا اے ٹی ایم ہیں۔ خط میں گورنر سندھ کو یہ بھی بتایا گیا ہے کہ ہم وفد کی شکل میں آپ سے ملاقات کے لیے گورنر ہاؤس آ رہے ہیں۔

یاد رہے کہ چند دن قبل بلوچستان سے بھی عبدالقادر کو جنرل سیٹ کے لیے سینیٹ ٹکٹ جاری کیا گیا تھا، تاہم بلوچستان ریجن کے کارکنوں کے احتجاج کے بعد ان سے ٹکٹ واپس لیا گیا اور ان کی جگہ ظہور آغا کو ٹکٹ دیا گیا۔

پی ٹی آئی بلوچستان نے عبدالقادر کو سینیٹ ٹکٹ دینے پر شدید تحفظات کا اظہار کیا تھا، اور ارکان نے ان کو پیراشوٹر قرار دیا تھا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں