The news is by your side.

Advertisement

پنجاب میں 80 فیصد سے زائد اینٹوں کے بھٹے جدید ٹیکنالوجی پر منتقل

لاہور: صوبہ پنجاب میں اینٹوں کے بھٹوں کو زگ زیگ ٹیکنالوجی پر منتقل کرنے کا کام جاری ہے، ماہرین کا کہنا ہے کہ زگ زیگ ٹیکنالوجی سے دھوئیں کے اخراج میں 40 فیصد کمی آتی ہے۔

تفصیلات کے مطابق ملتان کے ڈپٹی کمشنر عامر خٹک کی ہدایت پر ضلع کے اینٹوں کے تمام روایتی بھٹے بند کردیے گئے ہیں، ضلع میں 100 بھٹوں کو جدید نظام پر منتقل کرنے کے لیے کام جاری ہے۔

اب تک صوبہ پنجاب میں 82 فیصد روایتی بھٹے زگ زیگ ٹیکنالوجی پر منتقل کیے جاچکے ہیں، یعنی 8 ہزار 454 بھٹوں میں سے 6 ہزار 902 بھٹے زگ زیگ پر منتقل کیے جاچکے ہیں جبکہ مزید بھٹوں کو بھی جدید سسٹم پر منتقل کرنے کا کام جاری ہے۔

بھٹوں کی زگ زیگ سسٹم پر منتقلی سے ایئر کوالٹی انڈیکس میں بہتری آئے گی۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ زگ زیگ ٹیکنالوجی سے دھوئیں کے اخراج میں 40 فیصد کمی آتی ہے۔

ماہر ماحولیات ڈاکٹر عمر غوری کے مطابق زگ زیگ ٹیکنالوجی والا بھٹہ سفید دھواں خارج کرتا ہے جو سیاہ دھوئیں کے مقابلے میں کم نقصان دہ ہے، سیاہ دھواں نہایت آلودہ اور زہریلا ہوتا ہے جو ماحول کے لیے بے حد خطرناک ہے۔

سیاہ دھواں اسموگ کا سبب بھی بنتا ہے جو شہریوں میں دمہ، سانس کی بیماریاں، آنکھوں کے انفیکشن اور پھیپھڑوں کی بیماریاں پیدا کرنے کا باعث بنتا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں