The news is by your side.

Advertisement

کورونا سے بچانے والے ‘ایکٹیمرا انجکشن’ کو بطور ٹرائل ڈرگ استعمال کرنے کا فیصلہ

لاہور: کورونا سے بچانے والے ایکٹیمرا انجکشن کو بطور ٹرائل ڈرگ استعمال کرنے کا فیصلہ کرلیا گیا اور ٹرائل کےلیے صوبائی کمیٹی بنادی،جو نتائج کا جائزہ لے گی۔

تفصیلات کے مطابق پنجاب حکومت نے ایکٹیمرا انجکشن کو بطور ٹرائل ڈرگ استعمال کرنے کا فیصلہ کرلیا اور انجکشن کےٹرائل کےلیے صوبائی کمیٹی تشکیل دیتے ہوئے مراسلہ جاری کردیا ہے۔

مراسلے میں کہا گیا ہے کہ کمیٹی انجکشن پر تحقیقاتی ٹرائل کے نتائج کا جائزہ لے گی جبکہ تمام اسپتالوں کےایکٹیمرا انجکشن خریدنے پر پابندی ہو گی، محکمہ اسپیشلائزڈ ہیلتھ کیئراینڈ میڈیکل ایجوکیشن منظوری کےبعدانجکشن دیں گے۔

مراسلے کے مطابق صوبائی کمیٹی برائے تحقیقاتی ٹرائل ٹوسیلیزوماب میں 4ارکان شامل ہیں ، ڈاکٹر جاوید حیات کنوینر ،ڈاکٹرثاقب شریک کنوینرہوں گے جبکہ پروفیسر کامران چیمہ اور ڈاکٹر عرفان بطور رکن کمیٹی میں شامل ہیں۔

مزید پڑھیں : کورونا کے تمام تشویشناک مریضوں کو ‘ایکٹیمرا انجکشن’ دینے پر پابندی

گذشتہ روز کوروناایکسپرٹ ایڈوائزی گروپ نے کورونا کے تمام تشویشناک مریضوں کو ایکٹیمراانجکشن دینے اور انجکشن کی عام مارکیٹ میں فروخت پرمکمل پابندی عائد کردی تھی اور اس حوالے سے ایس او پیز جاری کردیے۔

ایس او پیز کے مطابق ایکٹیمرا انجکشن صرف ٹرائل کی بنیاد پر مخصوص اسپتالوں میں ہی استعمال ہوگا، ابتدائی طور پرانجکشن500 آئی سی یو میں زیر علاج مریضوں پر استعمال کیا جائے گا۔

ایڈوائزی گروپ ایکٹیمراانجکشن کےاستعمال کےلیےاسپتالوں کی منظوری دےگا ، سرکاری اسپتالوں میں انجکشن کااستعمال ایکسپرٹ گروپ اور پرائیوٹ اسپتالوں میں انجکشن کااستعمال پنجاب ہیلتھ کئیرکمیشن دیکھے گا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں