The news is by your side.

Advertisement

کوئٹہ ویڈیو اسکینڈل نیا رخ‌ اختیار کرگیا

کوئٹہ ویڈیو اسکینڈل نے نیا رخ اختیار کرلیا اور مبینہ طور پر مغوی دو لڑکیوں کی نئی ویڈیوز منظرعام پر آگئیں۔

اے آر وائی نیوز کے مطابق کوئٹہ ویڈیو اسکینڈل میں مبینہ طور پر مغوی لڑکیوں کا ویڈیو پیغام سامنے آیا ہے جس میں ان کا کہنا ہے کہ ہم افغانستان میں موجود ہیں، ہمیں کسی نے اغوا نہیں کیا ہم اپنی مرضی سے افغانستان آئیں۔

لڑکی کا ویڈیو پیغام میں کہا کہ میری والدہ اور باقی اہلخانہ بھی ہمارے ساتھ افغانستان میں ہیں۔

واضح رہے کہ گزشتہ دنوں ذرائع کا کہنا تھا کہ ویڈیو میں دکھائی دینے والی لڑکیاں ملزمان کے ساتھ ملی ہوئی تھیں، ہدایت اور خلیل نے 4 لڑکیاں مردوں کو ورغلانے کے لیے رکھی تھیں۔

فرانزک رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ ملزم ہدایت کے ساتھ چیٹ کے دوران کریمہ نے راز کھولنے کی دھمکی دی تھی، فرانزک رپورٹ میں اس چیٹ کا حوالہ دیا گیا ہے، جس کے مطابق ملزم ہدایت کے ساتھ اختلاف ہونے پر کریمہ نے سب راز کھولے ہیں، چیٹ میں کریمہ ملزم کو کہتی ہے میں سب کچھ باہر بتا دوں گی۔

 

مزید پڑھیں: کوئٹہ ویڈیو اسکینڈل کی اصل کہانی اے آر وائی نیوز پر

ملزم نے کریمہ کو جوابی دھمکی دیتے ہوئے کہا کہ اگر باہر کچھ بولا تو تمہاری ویڈیوز نیٹ پر چڑھا دوں گا۔

ذرائع کا کہنا تھا کہ مذکورہ ملزمان پارٹی کے نام پر لوگوں کو بلاتے تھے، اور لڑکیوں سمیت سب کو نشہ پلاتے تھے، اس کے بعد وہ نشے کی حالت میں غیر اخلاقی ویڈیوز بناتے تھے، انھی ویڈیوز کی بنیاد پر مہمانوں اور لڑکیوں کو بلیک میل کیا جاتا تھا، اور مہمانوں سے رقم وصول کی جاتی تھی۔

رپورٹ کے مطابق ملنے والی 280 میں سے 254 ویڈیوز اوریجنل ہیں، جب کہ باقی ویڈیوز میں تھوڑی ایڈیٹنگ ہوئی ہے، تاہم موصول ہونے والی ویڈیوز میں زیادتی نظر نہیں آ رہی، پولیس ذرائع کا یہ بھی کہنا ہے کہ ویڈیوز اور چیٹ میں بچوں کا کوئی ذکر نہیں ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں