The news is by your side.

بلوچستان میں بارش نے پھر تباہی مچا دی، پنجاب میں بارش سے مکانات منہدم

کوئٹہ/لاہور: بلوچستان اور پنجاب میں بارشوں نے پھر تباہی مچا دی، بلوچستان کے 17 اضلاع میں سیلابی صورت حال ہے، جب کہ پنجاب میں بھی کئی علاقے سیلاب کی زد پر ہیں۔

تفصیلات کے مطابق بلوچستان کے کئی اضلاع میں سیلابی صورت حال ہے، اوتھل ندی میں 2 گاڑیاں بہہ گئیں، جن میں سوار مسافروں کو بچا لیا گیا، ریلا متبادل راستے کو بھی بہا لے گیا ہے۔

کوئٹہ اور کراچی کے درمیان ٹریفک معطل ہو گئی ہے، جھل مگسی کے ندی نالوں میں طغیانی آئی ہوئی ہے، جس سے نشیبی علاقے زیر آب ہیں، ڈیرہ بگٹی میں موسلادھار بارش سے کچے مکانات گر گئے ہیں، سبی میں سیلابی ریلا سڑکیں بہا لے گیا۔

سبی میں 20 سے زائد دیہات کا زمینی رابطہ منقطع ہو چکا ہے، نصیرآباد میں کئی لوگ سیلاب میں اب بھی پھنسے ہوئے ہیں، کوہلو میں بارش سے مزید درجنوں کچے مکانات منہدم ہو گئے، جن میں 2 افراد جاں بحق، خواتین اور بچوں سمیت 5 زخمی ہو گئے، قلات کے ندی نالے بھی بپھر گئے ہیں جن سے کچے مکانوں کو نقصان پہنچا۔

اندرون سندھ بارشوں سے زندگی کا پہیہ جام، دادو میں طوفانی بارش کے خاتمے کے لیے اذانیں

پنجاب میں بارش سے مکانات گرنے کے بے تحاشا واقعات رونما ہوئے ہیں، بہاولنگر میں مکان کی چھت گرنے سے 3 خواتین جاں بحق ہوئیں، خان پور میں ایک شخص جاں بحق، اور بھکر میں 11 افراد زخمی ہوئے۔

جنوبی پنجاب میں بھی بارشوں سے تباہی مچ گئی ہے، تونسہ کے درجنوں دیہات ڈوب چکے، روجھان کے کوہی نالے میں طغیانی سے بند ٹوٹ گیا، جس سے متعدد بستیاں زیر آب آ گئیں، بھکر میں انڈر پاس بھر گیا، سڑکوں پر کئی کئی فٹ پانی جمع ہے۔

بلوچستان اور پنجاب کے سیلاب زدہ علاقوں میں پاک فوج کی امدادی سرگرمیاں بھی جاری ہیں، فوج کے دستے ڈی جی خان،ر اجن پور، نصیر آباد، لسبیلہ میں امدادی سرگرمیوں میں مصروف ہیں، متاثرہ آبادی اور ان کے سامان کو محفوظ مقامات پر منتقل کیا جا رہا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں