The news is by your side.

Advertisement

راج کپور بن کر ان کے مداحوں کو آٹو گراف دینے والا پاکستانی اداکار

’’انسان اور گدھا‘‘ پاکستانی فلمی صنعت کے نام وَر اداکار، فلم ساز اور ہدایت کار سیّد کمال کی وہ فلم تھی جسے شائقین نے‌ پذیرائی دی اور بہت پسند کیا، لیکن یہ فلم اس وقت حکومتی پابندی کی زد میں آئی جب بڑے پردے پر اس کی نمائش جاری تھی۔ اسے سنیما ہالوں سے ہٹا دیا گیا جس کا سیّد کمال کو بہت دکھ ہوا، لیکن فلمی سفر تو جاری رکھنا تھا۔ وہ آگے بڑھ گئے اور آنے والے دنوں میں‌ ان کی متعدد فلمیں کام یاب ہوئیں‌ اور ان کے دل سے مذکورہ فلم کا قلق جاتا رہا۔

سیّد کمال کو پاکستانی راج کپور بھی کہا جاتا تھا، کیوں کہ وہ مشہور بھارتی اداکار راج کپور سے گہری مشابہت رکھتے تھے۔ راج کپور سے ان کی بے تکلفی بھی تھی اور ملاقاتیں بھی ہوتی رہتی تھیں۔

مشہور ہے کہ ایک مرتبہ کسی فلم کی شوٹنگ کے لیے راج کپور بھارت کے کسی شہر کے ہوٹل میں‌ ٹھیرے ہوئے تھے، بھارت میں ان کے مداحوں کی تعداد بھی کچھ کم نہ تھی اور وہ اپنے وقت کے مقبول ہیرو تھے۔ مقامی لوگوں اور راج کپور کے مداحوں کو ہوٹل میں‌ ان کی موجودگی کا علم ہوا تو وہاں‌ ایک جمِ غفیر اکٹھا ہوگیا۔ ان کا اصرار تھا کہ راج کپور ہوٹل کی بالکونی میں آکر انھیں‌ اپنا دیدار کروائیں۔

شہرت اور مقبولیت بھی عجیب شے ہے۔ فلم اسٹارز کو اپنے مداحوں کا خیال رکھنا پڑتا ہے۔ راج کپور کی طبیعت اس وقت کچھ ناساز تھی۔ سیّد کمال ان کے ساتھ تھے، راج کپور نے انھیں کہاکہ وہ بالکونی میں جائیں اور لوگوں کو اپنا دیدار کرائیں۔ سیّد کمال ہوٹل کی بالکونی میں پہنچے اور لوگوں کو دیکھ کر اپنا ہاتھ ہلایا۔ لوگوں نے ان سے محبّت جتائی، نیک تمنّاؤں اور اپنی خوشی کا اظہار کرتے رہے۔ انھیں ایک لمحے کے لیے بھی شک نہ ہوا کہ یہ راج کپور نہیں بلکہ کوئی اور ہے۔

اس مجمع میں سے کچھ لوگوں نے راج کپور سے آٹو گراف لینا چاہا تو ہوٹل میں داخل ہوگئے۔ استقبالیہ پر رش بڑھنے لگا۔ انتظامیہ کی مشکل کو دیکھتے ہوئے راج کپور نے کمال سے پھر درخواست کی کہ وہ ان کی طرف سے آٹو گراف دے دیں۔ کمال کو یہ بھی کرنا پڑا۔ انھوں نے آٹو گراف بکس لیں اور انھیں‌ بھرتے چلے گئے۔ یہاں‌ بھی کسی کو شک نہ ہوسکا۔

مشہور ہے کہ سیّد کمال نے راج کپور سے کہا تھا کہ ’’آپ کی وجہ سے مجھے آج مداحوں کو آٹو گراف دینے اور کی محبت سمیٹنے کا ایسا خوب صورت تجربہ ہوا ہے، جب کہ ابھی میں کچھ نہیں ہوں۔ اس پر راج کپور نے کہا وہ وقت بھی آئے گا جب لوگ سیّد کمال سے آٹو گراف لینے آئیں گے۔ ان کی یہ پیش گوئی درست ثابت ہوئی اور سیّد کمال نے پاکستان میں مقبولیت اور نام و مقام حاصل کیا۔

کمال نے فلموں میں رومانوی، المیہ اور مزاحیہ کردار ادا کیے اور خوب شہرت حاصل کی۔ انھوں نے اپنے دور کی مشہور اداکاراؤں زیبا، دیبا، نیلو، شبنم، نشو اور رانی کے ساتھ کام کیا۔ کمال نے متعدد فلمیں بھی بنائیں۔ ان میں‌ اردو اور چند پنجابی زبان کی فلمیں شامل ہیں جو سپرہٹ ثابت ہوئیں۔ وہ فلم کے بعد ٹیلی ویژن پر بھی نظر آئے اور ایک شو کی میزبانی بھی کی جو بہت مقبول ہوا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں