The news is by your side.

Advertisement

’غیر ملکی قرضوں کی وجہ سے ملکی خود مختاری پر سمجھوتا کرنا پڑتا ہے‘

کراچی: چئیرمین سینیٹ رضا ربانی کا کہنا ہے کہ غیر ملکی قرضوں کی وجہ سے ملکی سلامتی اور خود مختاری پر سمجھوتہ کرنا پڑتا ہے، کوشش ہے کہ ملکی معیشت کو جلد مستحکم کریں۔

تفصیلات کے مطابق کراچی میں ایف پی سی سی آئی کے اکتالیسویں ایکسپورٹ ایوارڈز کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے چئیرمین سینیٹ میاں رضا ربانی کا کہنا تھا کہ ’تاجر برادری کی غیر ملکی قرضوں پر تشویش جائز ہے، غیر ملکی قرضے خواہیش کے لیے نہیں بلکہ ایکسپورٹ اور مقامی صنعت کو بڑھانے کے لیے لیے جاتے ہیں۔

اُن کا کہنا تھا کہ ’عالمی مالیاتی سامراج اپنی شرائط کے تحت قرضے دیتا ہے اور جب کوئی ملک غیر ملکی قرضہ لیتا ہے تو ساتھ اپنی خود مختاری بھی دیتا ہے‘۔

انہوں نے کہا کہ قائد اعظم کے پاکستان کو حاصل کرنے کے لئے بہت قربانی دی، آج بھی کوئی غیر ملکی ہمیں ڈکٹیشن دے تو تکلیف ہوتی ہے۔

علاوہ ازیں تقریب سے خطاب کرتے ہوئے صدر ایف پی سی سی آئی زبیر طفیل کا کہنا تھا کہ سی پیک کے پیش نظر اگلے چند برس ایکسپورٹرز کے لئے انتہائی اہم ہیں۔  اُن کا مزید کہنا تھا کہ ’کاشغر کو گوادر سے ملانے کے بعد کاروبار کے نئے دروازے کھلیں گے جو ملکی مستقبل کے لیے خوش آئند ہیں۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں