The news is by your side.

Advertisement

ڈالر کی قیمت میں ریکارڈ کمی، وجہ جانئے

کراچی: انٹر بینک میں ڈالر کی قدر میں 45 پیسے کی کمی واقع ہوئی ہے، جس کے بعد ڈالر پانچ ماہ کی سب سےکم ترین سطح پر آگیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق آج انٹر بینک میں ڈالر کی قیمت میں پینتالیس پیسے جبکہ اوپن مارکیٹ میں پچاس پیسے کی کمی واقع ہوئی، گراوٹ کے باعث انٹربینک میں ڈالر کا لین دین 161.37 اور اوپن مارکیٹ میں161روپے 80پیسے پر بند ہوا۔

اسی گراوٹ کے ساتھ ڈالر پانچ ماہ کی سب سےکم ترین سطح پرآ گیاہے، رواں سال اٹھائیس مئی کو انٹر بینک میں ڈالر168روپے43پیسےکی بلند ترین سطح پر پہنچا تھا،ڈالر کی قدر میں 5ماہ کےدوران7 روپے6 پیسے کمی ہوئی ہوئی ہے۔

اوپن مارکیٹ میں اگست سے لے کر اب تک ڈالر کی قدر میں 4اعشاریہ 25فیصدکمی ریکارڈ کی گئی ہے۔

واضح رہے کہ پاکستان کی معیشت اور کرنٹ اکاونٹ خسارے میں بہتری کے باعث ڈالر کی قدر میں کم واقع ہوئی ہے، اس سلسلے میں صدر فاریکس ایسوی ایشن ملک بوستان نے کہا تھا کہ رواں ماہ میں ڈالر 160 روپے سے بھی نیچے آجائے گا، کیونکہ روشن ڈیجیٹل پاکستان اکاونٹ سے بڑے پیمانے پر پاکستانی ملک میں پیسے بھیج رہے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں:  زرمبادلہ کے ذخائر میں 26 کروڑ 80 لاکھ ڈالرز کا اضافہ

فاریکس ایسوی ایشن کے صدر کا مزید کہنا تھا کہ کرونا میں لاک ڈاون کی وجہ سے ڈالر کی فروخت بہت کم ہوگی تھی، مگر اب بیرون ملک سے ترسیلات زر میں ریکارڈ اضافہ ہوا ہے، اگست کے مہینے میں ریکارڈ پونے 3 ارب ڈالر کی ترسیلات زر آئی گزشتہ دو ماہ سے بھی 2 ارب ڈالر ترسیلات زر آہی ہیں۔ ترسیلات زر کی یہی رفتار رہی تو یہ 30 ارب ڈالر کو بھی عبور کر سکتے ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں