site
stats
عالمی خبریں

زمبابوے کے صدر رابرٹ موگابے نے استعفیٰ دے دیا

ہرارے: زمبابوے کے 37 برس تک صدر رہنے والے رابرٹ موگابے نے منگل کے روز  اپنے عہدے استعفیٰ دے دیا۔

غیر ملکی خبررساں ادارے کے مطابق رابرٹ موگابے نے اپنی ہی جماعت کی جانب سے عدم اعتماد کی تحریک سامنے آنے کے بعد بذریعہ خط صدر کے عہدے سے مستعفیٰ ہونے کا اعلان کیا۔

مزید پڑھیں: زمبابوے میں فوج کا اقتدار پر قبضہ

اسپیکر نے مشترکہ اجلاس میں سابق صدر کا استعفیٰ پڑھ کر سنایا جس میں کہا گیا تھا کہ ’میں رابرٹ گابریل موگابے آئین کی 96 ویں آرٹیکل کے تحت اپنے عہدے سے فوری طور پر مستعفیٰ ہونے کا اعلان کرتا ہوں‘۔

موگابے نے اپنے استعفیٰ میں کہا کہ ’صدارت سے مستعفیٰ ہونے کا فیصلہ رضاکارانہ طور پر کیا تاکہ عوام کے فلاح و بہبود کا کام بہتر ہوسکے اور ملک کی موجودہ گشیدگی کا معاملہ بہتر ہوجائے‘۔

یہ بھی پڑھیں: زمبابوےمیں کشیدگی برقرار، صدرموگابے کا استعفی سے انکار

اسپیکر پارلیمنٹ نے موگابے کے مستعفیٰ ہونے کی تصدیق کی جس کے بعد اُن کا 37 سالہ دورِ اقتدار اختتام پذیر ہوا۔

واضح رہے کہ گزشتہ ہفتے زمبابوے کے رابرٹ موگابے نے نائب صدر کو جبری برطرف کر کے اُن کی جگہ اپنی اہلیہ کو یہ عہدہ تفویض کرنے کا اعلان کیا تھا جس کے بعد ملک کے حالات کشیدہ ہوگئے تھے۔

اسے بھی پڑھیں: زمبابوے صدررابرٹ موگابے کے خلاف آج مارچ ، فوج کی حمایت کا اعلان

زمبابوے کی فوج نے بڑھتی ہوئی کشیدگی اور بحران کو مدنظر رکھتے ہوئے سرکاری میڈیا پر کنٹرول حاصل کرلیا تھا، بعد ازاں موگابے کی اپنی ہی جماعت نے اُن کے خلاف ریلی نکالنے کا اعلان کیا جس کی فوج نے بھی حمایت کی تھی۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top