The news is by your side.

Advertisement

اسقاط حمل کیس: مراکش کے بادشاہ نے خاتون صحافی کو معاف کردیا

رباط: مراکش کے بادشاہ محمد ہشتم نے اسقاط حمل کیس میں گرفتار خاتون صحافی ’ہرج ریسومی‘ کی سزا معاف کرتے ہوئے رہا کردیا۔

تفصیلات کے مطابق مراکش میں خاتون صحافی کو اپنے منگیتر سے جنسی تعلق رکھنے اور اسقاط حمل کے جرم میں سزا سنائی گئی تھی جسے بادشاہ نے معاف کردیا۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق وزرات انصاف کا کہنا ہے کہ ہرج کو گذشتہ ماہ ایک سال کی سزا سنائی گئی تھی۔ اس فیصلے کے بعد انسانی حقوق کی تنظیموں نے مراکش حکومت کے خلاف شدید احتجاج کیا تھا۔

خاتون صحافی نے عدالتی فیصلے کو مسترد کرتے ہوئے کہا تھا کہ یہ مجھ سے انتقام لیا جارہا ہے، ہرج ریسومی رباط حکومت کے غلط پالیسیوں پر آواز بلند کرتی رہی ہیں۔

بادشاہ نے انسانی ہمدری کے تحت سزا معاف کرتے ہوئے زور دیا کہ وہ قانونی اور مذہبی طور پر خاندانی رشتہ استوار کرکے اپنی نئی زندگی کا آغاز کریں۔

دوسری جانب خاتون صحافی کے منگیتر کا کہنا تھا کہ وہ دونوں رشتہ ازدواج میں بندھ چکے تھے لیکن قانونی طور پر کوئی دستاوزات نہیں بنوائی تھیں۔

مراکش میں اسقاط حمل غیرقانونی ہے، ایک اعداد وشمار کے مطابق پابندی کے باوجود گذشتہ سال روزانہ کی بنیاد پر 600 سے 800 اسقاط حمل کرایا گیا، جن میں سے 41 کیس ریکارڈ ہوئے۔

خیال ہے کہ ہرج ریسومی مراکش میں ’الیوم‘ نامی اخبار میں بحیثیت صحافی اپنے پیشہ ورانہ خدمات سرانجام دیتی ہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں