The news is by your side.

Advertisement

یوکرین کے ایندھن کا سب سے بڑا ذخیرہ تباہ

روس نے دعویٰ کیا ہے کہ اس نے یوکرین کا ایندھن کا سب سے بڑا ذخیرہ تباہ کردیا ہے جو آخری سب سے بڑا ذخیرہ تھا۔

روسی میڈیا کے مطابق روس کی وزارت دفاع نے ایک بیان میں بتایا کہ کل شام کو کلیبر کروز میزائل کے سٹیک حملے میں کیف کے نزدیک واقع کالیانیوکا گاؤں میں ایندھن کے ذخیرے کو تباہ کر دیا گیا ہے۔

روسی وزارت دفاع نے مزید کہا ہے کہ یوکرین میں فوجی آپریشن کے آغاز سے اب تک روس کی فوج نے 260 سے زائد ڈرون طیارے، 1580 سے زائد ٹینک اور بکتربند گاڑیاں اور 204 اینٹی ائیرکرافٹ سسٹم کو تباہ کر دیا ہے جبکہ یوکرین کی فوج نے اب تک روس کو نہ صرف زیادہ پیشرفت سے بھی روکے رکھا ہے جبکہ کامیابی کے ساتھ حملے بھی کر رہی ہے۔

روسی وزارت دفاع کے مطابق یوکرین میں فوجی آپریشن کا پہلا ہدف دونباس ریجن کو آزاد کرنا تھا، لوہانسک اور دونیسک ریاستوں کے ساتھ ساتھ دونباس ریجن کا 93 فیصد علاقہ روس کے کنٹرول میں چلا گیا، جنگ میں اب تک 1351 روسی فوجی ہلاک جبکہ 3825 زخمی ہو چکے ہیں۔

روسی فوج نے کیف میں ایک آئل ڈپو کو کروز میزائل حملے میں تباہ کر دیا، آئل ڈپو میں لگنے والی آگ پر ایک روز گزرنے کے بعد بھی قابو نہیں پایا جاسکا۔

روسی وزارت خارجہ کے ترجمان نے کہا کہ صدر ولادیمیر پوتن کے اہداف حاصل ہونے تک فوجی آپریشن رہے گا، یوکرین کے جن شہروں کا محاصرہ جاری ہے، اگلے مرحلے میں وہاں پیشقدمی ہوسکتی ہے، روسی فوج کو مشرقی محاذ پر اہم کامیابی ملی ہے۔

واضح رہے کہ روس کی جانب سے تباہ کیے جانیوالے ایندھن کے مذکورہ ذخیرے سے مرکزی یوکرین میں روس کے خلاف بر سر پیکار یوکرین کی فوج کو ایندھن کی سپلائی کی جاتی تھی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں