The news is by your side.

Advertisement

روس کا بھرپور فوجی قوت کا مظاہرہ، فوجی مشقوں اور میزائل تجربوں کا آغاز

ماسکو: روس نے اپنی بھرپور عسکری قوت کا مظاہرہ کرتے ہوئے متعدد میزائلوں کے تجربوں کا آغاز کردیا ہے۔ اس کے لیے آبدوزیں اور ہوائی جہاز استعمال کیے جارہے ہیں۔

مقامی میڈیا کے مطابق روس نے اہم اسٹریٹجک ڈرل میں آبدوزوں، زیر زمین سائلوز اور ہوائی جہاز سے میزائل داغے جبکہ روسی سب میرینز نے زیر زمین سائلوز اور ہوائی جہاز سے میزائل لانچ کیا۔

اس حوالے سے روسی وزارت دفاع کا کہنا ہے کہ بارینٹس بحیرہ میں کریلیا جوہری سب میرین سے بین البراعظمی بیلسٹک میزائل کے تجربے کا آغاز بھی کیا گیا ہے۔

خیال رہے کہ روس نے حالیہ برسوں میں مغربی ممالک کے ساتھ تناؤ کے دوران اپنی فوجی مشقوں میں توسیع کی ہے کیونکہ روس کے سنہ 2014 میں ہونے والے اتحاد کے بعد سرد جنگ کے بعد پہلی بار روس اور مغرب کے مابین تعلقات کشیدہ ہوگئے ہیں۔

ان حالیہ تجربات میں ڈیلیٹا چہارم کلاس آبدوز کاریلیا 18 بارینٹس سی میں لانچ ہوا۔ اس ضمن میں روسی وزارت دفاع کے ٹی وی زیو زڈا نے بھی ارکنگلسک خطے میں پلیسیسک کوسو ڈوموم سے بین البراعظمی میزائل لانچ کرنے پر روشنی ڈالی۔

اس موقع پر اینجلس اور یوکرینکا ایئر فیلڈز سے ٹی یو 160 اور ٹی یو 95 اسٹریٹجک بمباروں سے بھی کئی لونگ رینج کروز میزائل فائر کیے گئے۔

خیال رہے کہ ماسکو اور واشنگٹن دونوں نے گذشتہ سال سنہ 1987 کے انٹرمیڈیٹ رینج نیو کلیئر فورسز معاہدے سے دستبرداری کے بعد اپنی میزائل قوت میں اضافے کا اعلان کیا ہے، اب نیو اسٹارٹ ہی دونوں ممالک کے مابین جوہری ہتھیاروں پر قابو پانے کا واحد معاہدہ باقی ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں