روس کی جانب سے مذاکرات کی دعوت طالبان نے قبول کرلی: Moscow: Taliban
The news is by your side.

Advertisement

روس کی جانب سے مذاکرات کی دعوت طالبان نے قبول کرلی

ماسکو: روسی حکام کی جانب سے دی گئی مذاکرات کی دعوت طالبان نے قبول کرلی، جلد طالبان کے رہنماؤں سے ملاقات ہوگی۔

تفصیلات کے مطابق ماسکو حکومت نے طالبان سے بہتر تعلقات کے لیے مذاکرات کی دعوت دی تھی جسے طالبان نے قبول کرلی، اگلے ماہ روس میں ہی دونوں فریقوں کے درمیان مذاکرات ہوں گے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق روسی وزیر خارجہ سیرگئی لاوروف نے کہا ہے کہ افغان طالبان نے چار ستمبر کو ماسکو میں ہونے والے مذاکرات میں شرکت کی دعوت قبول کر لی ہے۔

روسی وزیر خارجہ کا مذاکرات سے متعلق کہنا تھا کہ روس کے طالبان سے مذاکرات کا مقصد افغانستان میں روسی شہریوں کی سلامتی کو یقینی بنانا اور طالبان کو امن عمل کے لیے تیار کرنا ہے۔

طالبان جنگ کے خاتمے کے لیے امریکا سے مذاکرات پر تیار

ان کا مزید کہنا تھا کہ ملاقات اور مذاکرات کے ذریعے مسائل کا حل ممکن ہے، چاہتے ہیں کہ طالبان امن عمل میں شامل ہو تاکہ خطے میں امن وسلامتی آئے۔

خیال رہے کہ گذشتہ ہفتے طالبان کے ایک اعلیٰ سطح وفد نے ازبکستان میں اپنا چار روزہ دورہ مکمل کیا تھا، اس دورے کے دوران طالبان رہنماؤں نے ازبکستان کے وزیر خارجہ عبدالعزیز کامیلوف سے بھی ملاقات کی تھی۔

دوسری جانب امریکی حکام نے بھی طالبان کے ساتھ براہ راست مذاکرات کرنے کا عندیہ دیا تھا، تاہم ابھی تک عملی طور پر کوئی نتائج سامنے نہیں آئیں، جبکہ امریکا افغانستان میں طالبان کے خلاف اپنے عسکری حملوں میں بھی کمی لا چکا ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں