The news is by your side.

Advertisement

روس کا جدید نیوکلیئر میزائل کا کامیاب تجربہ، پیوٹن نے نئے سال کا تحفہ قرار دے دیا

ماسکو: روس نے اپنے دفاعی نظام کے لیے جدید نیوکلیئر میزائل کا کامیاب تجربہ کرلیا، صدر ولادی میرپیوٹن نے اس میزائل کو نئے سال کا تحفہ قرار دیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق روسی صدر ولادی میرپیوٹن نے اس جدید نیو کلیئر میزائل کو قوم کے لیے سال نو کا تحفہ قرار دیتا ہوئے اسے 2019 میں دفاعی نظام میں شامل کرنے کا عندیہ دیا ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق روسی صدر کا کہنا ہے کہ ’ایوانگارڈ ہائی پرسونک‘ نامی میزائل جدید اور اپنی نوعیت کا منفرد میزائل ہے جو 2019 میں روسی دفاعی نظام میں شامل ہوجائے گا۔

ولادی میرپیوٹن کا کہنا تھا کہ روس وہ واحد ملک ہے جو اپنے خطے کی سیکیوٹی بہتر اور شہریوں کی حفاظت کو یقینی بنانے کے لیے نئے طرز کے جدید ہتھیار رکھتا ہے۔

روس کا آواز کی رفتار سے تیز میزائل کا کامیاب تجربہ

حکام کے مطابق 15000 میل فی گھنٹہ کی رفتار سے ہدف کو نشانہ بنانے والے میزائل کا تجربہ ’تمبوسکائی‘ نامی روسی ایئربیس پر کیا گیا، اس موقع پر روسی صدر ولادی میر پیوٹن، وزیر دفاع سرگئی سوئیگو سمیت دیگر اعلیٰ عسکری قیادت نے شرکت کی۔

واضح رہے کہ رواں سال مارچ میں بھی روس نے ایک نیا میزائل تجربہ کیا تھا، روسی صدر ولادیمیر پیوٹن کنزال میزائل کے حوالے سے پہلے ہی آگاہ کر چکے تھے کہ ’روس عنقریب نئے میزال کا تجربہ کرے گا جسے کسی بھی ملک کا ریڈار سسٹم ٹریک نہیں کرسکتا‘۔

بعد ازاں امریکی حکام نے روس کی جانب سے بنائے گئے آواز کی رفتار سے تیز کنزال میزائل کے تجربے پر کہا تھا کہ’ روس نے نیا میزائل بنا کر ہتھیاروں کے معاہدے کی خلاف ورزی کررہا ہے‘۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں