The news is by your side.

Advertisement

سترہ سال سال بعد غیر قانونی اسلحہ کیس کا فیصلہ، سلمان خان بری

نئی دہلی : سترہ سال سال بعد غیر قانونی اسلحہ کیس کا فیصلہ آگیا، جودپور کی عدالت نے دبنگ خان کو بری کردیا۔

بھارتی ریاست جودھ پور کی عدالت میں آج سلمان خان پر غیر قانونی اسلحہ رکھنے کے مقدمے کی سماعت ہوئی، جسمیں سلمان خان بھی پیش ہوئے، عدالت نے سترہ سال سے جاری کیس میں ثبوت ناکافی ہونے کی بناء پر بالی وڈ اداکار کو بری کر دیا۔

بھارتی میڈیا کے مطابق سلمان خان نے عدالت سے استدعا کی تھی کہ انہوں نے کوئی قانون کی خلاف ورزی نہیں کی اور نہ ہی غیر قانونی اسلحہ استعمال کیا ہے۔ان کے وکیل نے دلائل دیئے کہ اس بات کا کوئی ثبوت نہیں ہے کہ انہوں نے ایئر گن کی بجائے کوئی اور اسلحہ شکار کیلئے استعمال کیا، عدالت نے شواہد ناکافی ہونے پر انہیں بری کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

سلمان خان جب فتح کے ساتھ عدالت کے باہر آئے تو مداحوں کا جم غفیر موجود تھا، سلمان خان نے ٹوئیٹ کرتے ہوئے سب کا شکریہ ادا کیا۔

یاد رہے کہ سلمان خان کے خلاف یہ کیس 1998 میں جودھ پور میں درج کیا گیا تھا، سلمان خان پر الزام تھا کہ انیس سو اٹھانوے کی فلم ہم ساتھ ساتھ ہیں کی شوٹنگ کے دوران جودھ پور میں نایاب کالے ہرن کا شکار کیا تھا ، شکار کے لئے استعمال ہونے والا اسلحہ بھی غیر قانونی تھا۔

اس سے پہلےاسی کیس میں سلمان سات دن کیلئے جیل کی ہوا کھا چکے ہیں۔


مزید پڑھیں : کالے ہرن اور چنکارا شکار کیس میں سلمان خان بری


یاد رہے گذشتہ سال جولائی میں راجستھان ہائی کورٹ نے کالے ہرن اور چنكارا شکار کیس میں سلمان خان کو باعزت بری کرتے ہوئے اپنے فیصلے میں کہا کہ اس بات کے کوئی ٹھوس شواہد نہیں ملے کہ کالے ہرن کو سلمان خان نے ہی مارا تھا۔

یاد رہے کہ سلمان خان کو پہلی بار 17 فروری 2006 کو جودھپور کی نچلی عدالت سے ایک سال کی سزا ہوئی تھی، جودھپور کے پاس بھواد گاؤں میں 26-27 ستمبر کی رات 1998 میں شکار کیا تھا، کالے ہرن کے غیر قانونی شکار کے مقدمے میں 2006 میں لوئر کورٹ نے سلمان خان کو 5 برس قید کی سزا سنائی تھی تاہم سلمان خان نے اس فیصلے کو ہائی کورٹ میں چیلنچ کردیا تھا اور وہ ضمانت پر تھے۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں