The news is by your side.

Advertisement

معروف سارنگی نواز استاد حامد حسین خان کی برسی

انسانی آواز سے قریب ترین سمجھی جانے والی سارنگی وہ ساز ہے جس پر روایتی دھنوں میں عوامی شاعری سنانے والے کئی فن کاروں نے ہندوستان بھر میں‌ نام پیدا کیا اور اب یہ ساز اور اس کے ماہر ماضی کی خوب صورت یاد بن کر رہ گئے ہیں۔ سارنگی ایک کمان سے بجنے والا اور چھوٹی گردن کا تانتل ساز ہے جو ہندوستانی کلاسیکی سنگیت کا خوب صورت حصّہ رہا ہے۔

آج استاد حامد حسین خان کی برسی ہے جن کا شمار پاکستان کے معروف سارنگی نوازوں میں‌ ہوتا ہے۔ وہ 2 نومبر 1980ء کو کراچی میں وفات پاگئے تھے۔

مراد آباد سے تعلق رکھنے والے استاد حامد حسین خان 1905ء میں پیدا ہوئے۔ ان کے آبا و اجداد عرصہ دراز سے ریاست رام پور میں دربار سے وابستہ تھے اور موسیقی کے حوالے سے ان کا مشہور رہا ہے۔

استاد حامد حسین خان نے موسیقی کی تعلیم اپنے نانا استاد حیدر بخش خان اور اپنے والد استاد عابد حسین خان سے حاصل کی جب کہ سارنگی کی تربیت اپنے ماموں استاد علی جان خان سے لی۔

استاد حامد حسین خان آل انڈیا ریڈیو اور ریڈیو پاکستان سے وابستہ رہے۔ انھیں‌ اس ساز پر مکمل مہارت حاصل تھی۔ وہ نہایت عمدہ سارنگی بجاتے اور مہارت سے دوسرے فن کاروں کی سنگت کرتے تھے۔

استاد حامد حسین خان نے ہندوستان کے علاوہ بیرون ملک بھی اپنے فن کا مظاہرہ کیا اور داد و تحسین سمیٹی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں