The news is by your side.

Advertisement

مانچسٹر ٹیسٹ: سرفراز نے ایک بار پھر خود کو بڑا کھلاڑی ثابت کردیا

اولڈ‌ ٹری فورڈ: مانچسٹر میں کھیلے جانے والے ٹیسٹ میچ میں سرفراز احمد نے ایک بار پھر اسپورٹس مین اسپرٹ کا مظاہرہ کر کے خود کو  بڑا کھلاڑی ثابت کردیا۔

مانچسٹر کے اولڈ ٹری فورڈ اسٹیڈیم میں کھیلے جانے والے پہلے ٹیسٹ میچ کے دوسرے روز چیمپئز ٹرافی کے فاتح کپتان اور قومی ٹیم کے سابق قائد سرفراز احمد پانی کی بوتلیں لے کر پچ پر موجود بلے بازوں کے پاس آئے۔

سرفراز احمد بارہویں کھلاڑی کی حیثیت سے ہاتھوں میں پانی کی بوتلیں پکڑے پچ پر کھڑے بلے بازوں شان مسعود اور شاداب کے پاس آئے اور انہیں پانی پیش کرنے کے ساتھ حوصلہ افزائی بھی کی۔

اس موقع پر سرفراز کے چہرے پر کوئی ندامت نہیں تھی اور وہ بارہویں کھلاڑی ہونے کے باوجود سینئر ہونے کے ناطے نوجوان بلے بازوں کی حوصلہ افزائی بھی کرتے رہے۔

سرفراز احمد کی تصاویر کو گریپ کر کے صارفین نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر شیئر کیا اور ٹیم مینیجمنٹ کے رویے کے خلاف آواز بلند کی۔ سوشل میڈیا صارفین کا کہنا تھا کہ سابق کپتان اور چیمپئنز ٹرافی کے فاتح قائد کے ساتھ اس طرح کا رویہ قابلِ مذمت ہے کیونکہ ڈریسنگ روم میں دیگر کھلاڑی بھی موجود تھے اور یہ کام اُن سے بھی کروایا جاسکتا تھا۔

اے آر وائی نیوز کے پروگرام اسپورٹس روم کے اینکر نجیب الحسنین کا کہنا تھا کہ پی سی بی اور ٹیم مینیجمنٹ کو کم از کم اس بات کا خیال رکھنا چاہیے تھا کہ وہ سرفراز کو واٹر بوائے نہ بنائیں کیونکہ اس کی وجہ سے دنیا بھر میں‌ پاکستان کی جگ ہنسائی ہوگی۔

کرکٹ‌ پر گہری نظر رکھنے والے سینئر صحافی برائے کھیل شاہد ہاشمی کا کہنا تھا کہ میدان میں تمام کھلاڑی برابر ہوتے ہیں، ماضی میں رکی پونٹنگ، یونس خان، سچن ٹنڈولکر اور دیگر لیجنڈری کرکٹر بھی واٹر بوائے کا کام کرچکے ہیں، سرفراز احمد اُن سے بڑا کھلاڑی نہیں ہے۔

اُن کا کہنا تھا کہ ’سرفراز نے ایک بار پھر خود کو اسپورٹس مین ثابت کیا اور بتایا کہ وہ ایک اچھا کھلاڑی ہے جو زیادتی کے باوجود اپنے جذبے کو کم ہونے نہیں‌ دے رہا‘۔ اس موقع پر شاہد ہاشمی نے پی سی بی کی جانب سے سرفراز کے ساتھ کی جانے والی زیادتیوں کا ذکر بھی کیا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں