The news is by your side.

Advertisement

سعودی حکومت نے تارکین وطن کیلئے سخت قوانین مقرر کردیئے

ریاض : سعودی حکومت نے مقامی شہریوں کے نام سے غیرملکیوں کے کارگو ٹرانسپورٹ کے انسداد کے لیے نئے سخت ضابطے مقرر کیے ہیں۔

سعودی ذرائع ابلاغ کے مطابق سعودی حکومت نے اس حوالے سے دو طرح کے اقدامات کیے ہیں، ایک جانب تو ساڑھے تین ہزار کلوگرام سے زیادہ وزن والی گاڑیوں کے مالک اداروں اور افراد کو مقررہ حد سے زیادہ سامان لادنے کی اجازت دی گئی ہے۔

انہیں ایک برس کے اندر شاہراہوں پر سامان لانے لے جانے کا اجازت نامہ حاصل کرنے کی درخواست دینے کا موقع فراہم کیاجارہا ہے اس اقدام کا مقصد یہ ہے کہ مقامی شہری اس کاروبار میں ممکنہ حد تک آگے آئیں۔

سعودی حکومت نے پبلک ٹرانسپورٹ وہیکل رجسٹریشن کے اجراء کی فیس اور نمبر پلیٹ کے اجراء کی فیس سے رخصت طلب کرنے والوں کو فیس سے استثنی دیا ہے۔ عمل درآمد نئے فیصلے پر نوے دن گزرنے کے بعد سے ہوگا۔

سعودی حکومت گاڑیوں کے مالک اداروں اور افراد کی وہیکل رجسٹریشن فیس اور نمبر پلیٹ فیس سرکاری خزانے سے ادا کرے گی۔

دوسری جانب حکومت نے مقامی شہریوں کے نام سے غیرملکیوں کے ٹرک کارگو کاروبار کے انسداد کے لیے متعدد ضابطے جاری کیے ہیں۔

ان میں سے ایک یہ ہے کہ سامان لادنے کے معاہدے صرف ان لوگوں کے ساتھ کیے جائیں گے جن کے پاس شاہراہوں پر سامان لانے لے جانے کے لیے پبلک ٹرانسپورٹ اتھارٹی کا اجازت نامہ ہوگا۔

دوسری پابندی یہ لگائی گئی ہے کہ کارگو سروس کے بل کی ادائیگی میں اس بات کی پابندی کی جائے گی کہ پبلک ٹرانسپورٹ اتھارٹی کی منظور شدہ دستاویز رکھنے والے ٹرکوں ہی کے کارگو بل ادا ہوں گے۔

اس پابندی کا سبب یہ ہے کہ مقامی شہریوں کے نام سے کاروبار کرنے والے غیرملکی اصل ٹھیکے داروں سے درپردہ معاملہ طے کرکے کارگو سروس فراہم کررہے ہیں۔

اس بندش سے غیرملکیوں کے کاروبار کا انسداد ہوگا، سعودیوں کے نام سے کاروبار کرنے والے غیرملکیوں کے  ٹرکوں کو کسٹم میں آنے جانے کی اجازت نہیں ہوگی۔

ایک پابندی یہ بھی لگائی گئی ہے کہ کوئی غیرملکی ڈرائیور ہیوی ڈرائیونگ لائسنس حاصل کرنا چاہے گا تو ایسی صورت میں اس سے پبلک ٹرانسپورٹ اتھارٹی کی جانب سے جاری کردہ پروفیشنل کارڈ طلب کیا جائے گا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں