The news is by your side.

Advertisement

سعودی عرب: اب 4 پیشوں میں غیر ملکی کام نہیں کر سکیں گے

ریاض: سعودی عرب میں اب 4 پیشوں میں غیر ملکی کام نہیں کر سکیں گے، ان پیشوں میں سو فی صد سعودائزیشن لائی جا رہی ہے۔

تفصیلات کے مطابق سعودی وزارت افرادی قوت و سماجی بہبود امور کے ماہر ماجد القعیط نے کہا ہے کہ اتوار 8 مئی 2022 سے سیکریٹری، ٹرانسلیٹر، اسٹاک کیپر اور ڈیٹا انٹری آپریٹر کے پیشوں میں کسی ایک پر بھی غیر ملکی کام نہیں کر سکے گا۔

ان کا کہنا تھا کہ ان پیشوں میں سے کسی پر اگر کوئی غیر ملکی کام کرتا پایا گیا تو اس کے خلاف کارروائی ہوگی، اسے قانون کی سو فی صد خلاف ورزی کرنے والا شمار کیا جائے گا۔

الاخباریہ چینل سے گفتگو کرتے ہوئے ماجدالقعیط نے کہا کہ ان چاروں پیشوں کی سو فی صد سعودائزیشن کا اعلان کیا گیا ہے، اس لیے کسی بھی غیر ملکی کو ان پیشوں پر کام کی اجازت نہیں، یہ اب سعودیوں کے لیے مختص ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ ماضی میں بعض پیشوں کی جزوی سعودائزیشن کی گئی تھی، جس کا مطلب یہ تھا کہ مخصوص تعداد میں غیر ملکی بھی ان پیشوں پر کام کے مجاز تھے، لیکن اب ان چار پیشوں کی مکمل سعودائزیشن کی گئی ہے۔

پروگرام کے مطابق ان چاروں پیشوں کی سعودائزیشن کے فیصلے سے 20 ہزار سعودی لڑکوں اور لڑکیوں کو ملازمتیں ملیں گی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں