The news is by your side.

Advertisement

سعودی ایوی ایشن میں پہلی بار خواتین ہوا بازوں کی تربیت

دمام: سعودی عرب میں خواتین کو ڈرائیونگ کی اجازت ملنے کے بعد اب سعودی ایوی ایشن اکیڈمی میں پہلی مرتبہ سعودی خواتین پائلٹوں کو طیارے اُڑانے کی تربیت دی جائے گی۔

عرب میڈیا کے مطابق آکسفورڈ ایوی ایشن اکیڈمی کی مشرقی شہر دمام میں واقع برانچ میں سیکڑوں خواتین نے ہوا بازی کی تربیت لینے کے لیے درخواستیں جمع کرادی ہیں، توقع کی جارہی ہے کہ ستمبر کے پہلے ہفتے میں تربیت دینے کا آغاز کردیا جائے گا۔

ایک سول پائلٹ بننے کی خواہش مند خاتون کا کہنا ہے کہ پہلے لوگ بیرون ملک شہری ہوا بازی کی تربیت کے لیے جانے کے عادی ہوچکے تھے لیکن بیرون ملک خواتین کے لیے شہری ہوا بازی کی تربیت مردوں کی بہ نسبت بہت مشکل تھی۔

انہوں نے کہا کہ ہم ایک ایسے دور میں نہیں رہ رہے ہیں جہاں خواتین کو صرف محدود شعبوں میں کام کرنے کی اجازت ہو، اب خواتین کے لیے تمام اُفق کھلے ہیں، اگر آپ میں کوئی کام کرنے کی لگن ہے تو پھر آپ اس کام کو بخوبی انجام دے سکتے ہیں۔

واضح رہے کہ آکسفورڈ ایوی ایشن اکیڈمی 30 کروڑ ڈالرز کے ایک منصوبے کا حصہ ہے، اس میں طیاروں کی تربیت کے لیے ایک اسکول بھی شامل ہے، اس کے علاوہ ہوائی اڈے پر طیاروں کو پرواز میں مدد دینے کے لیے ایک بین الاقوامی مرکز بھی قائم کیا گیا ہے۔

اکیڈمی کے ایگزیکٹو ڈائریکٹر عثمان الموطیری کے مطابق ان کے یہاں طلبا کو تین سال کی تدریسی اور عملی تربیت دی جاتی ہے۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں۔ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں