The news is by your side.

Advertisement

دنیا ایرانی دہشت گردی کے خلاف سعودیہ کا ساتھ دے، سعودی کابینہ

ریاض : سعودی عرب کی کابینہ نے اجلاس کے دوران عالمی برادری پر زور دیا کہ دہشت گردی و انتہا پسندی اور خطے میں جاری ایران کی قبیح سرگرمیوں کے خلاف سعودی حکومت کا ساتھ دے۔

تفصیلات کے مطابق سعودی عرب کے بادشاہ شاہ سلمان بن عبد العزیز کی سربراہی میں جاری اجلاس میں کابینہ نے سعودی عرب کی ثالثی میں برسوں سے ایک دوسرے کے خلاف نبرد آزما ایتھوپیا اور اریٹریا کے مابین امن معاہدے کی تعریف کی اور سلمان بن عبد العزیز نے امن معاہدے کے لیے ولی عہد کی کوششوں کو سراہا ہے۔

عرب خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ سعودی کابینہ کے اجلاس کے بعد جاری بیان میں عالمی برادری کے خطے میں جاری ایرانی دہشت گردی کے خلاف متحد ہونے کی ضرورت پر زور دیا گیا ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ ایرانی رجیم عرب ممالک کے اندرونی معاملات میں کئی عرصے سے مداخلت کررہی ہے اور خطے میں سرگرام دہشت گرد تنظیموں کی معاونت بھی کررہی ہے۔

سعودی کابینہ کا جاری بیان میں کہنا تھا کہ عالمی برادری کو ایران کی سپاہ پاسداران کی دہشت گردانہ سرگرمیوں کی روک تھام کے لیے سیسہ پلائی دیوار بننا ہوگا، دنیا کو سعودی عرب کی جانب سے دہشت گردی کے خلاف جاری جنگ میں ریاست کے ساتھ تعاون کرنا ہوگا۔

سعودی عرب کے وزیر اطلاعات و نشریات ڈاکٹر صالح العواد کا کہنا تھا کہ کابینہ اجلاس کے دوران مشرق وسطیٰ جاری مسائل اور عالمی برادری کی مشکلات پر غور کیا گیا۔

یاد رہے کہ ایک ماہ قبل سعودی عرب کی وفاقی کابینہ کا اجلاس نیوم سٹی میں حاکم وقت شاہ سلمان بن عبد العزیز کی زیر صدرات منعقد ہوا تھا، جس میں ایرانی حمایت یافتہ حوثی جنگجوؤں کی سعودی عرب کے تیل بردار جہازوں پر حملے اور خطے میں بڑھتی ہوئی ایرانی مداخلت پر گفتگو کی گئی۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ اجلاس کے دوران سعودی عرب کی وفاقی کابینہ نے سرحد پار سے جاری ایران نواز حوثیوں کی بڑھتی ہوئی دہشت گردی اور دیگر عالمی مسائل پر بھی شدید تحفظات کا اظہار کیا تھا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں