The news is by your side.

Advertisement

سرکلر ریلوے کیس : وزیراعلیٰ سندھ کوتوہین عدالت کا نوٹس جاری

اسلام آباد : سپریم کورٹ نے کراچی سرکلرریلوےکیس میں وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ کوتوہین عدالت کا نوٹس جاری کردیا۔ نوٹس سندھ حکومت کی جانب سے تعمیراتی کام کے ڈیزائن کی منظوری نہ دینے پر جاری کیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ میں کراچی سرکلرریلوےکیس سےمتعلق سماعت ہوئی ، چیف جسٹس گلزار احمد نے سوال کیا کہ ایف ڈبلیو او نے تاحال کام کیوں نہیں شروع کیا ؟کس نےڈیزائن کی منظوری دینی تھی جو تاحال نہیں ہوئی۔

ڈی جی ایف ڈبلیو او نے بتایا کہ ریلوے نےڈیزائن اور سندھ حکومت نےحکم دینا ہے،ہم نےڈیزائن بناکردیاتھا،جسے سندھ حکومت نےتاحال منظورنہیں کیا، سیکرٹری ٹرانسپورٹ نے بات کرنےکی کوشش کی تو چیف جسٹس نے ڈانٹتے ہوئے کہا کہ اپنی باری پر بولیے گا، تین ماہ میں کے سی آر کے پلوں اور انڈر پاسز کا کام مکمل نہیں ہوا۔

عدالت نے وزیر اعلی سندھ کو توہین عدالت کا نوٹس جاری کرتے ہوئے آئندہ سماعت پر ذاتی حیثیت میں طلب کر لیا، نوٹس سندھ حکومت کی جانب سے تعمیراتی کام کے ڈیزائن کی منظوری نہ دینے پر جاری کیا گیا۔

چیف جسٹس نے سوال کیا ماڈرن کے سی آر کا کوئی ڈیزائن ہے؟ سیکرٹری ریلوے نے بتایا کہ کنسلٹنٹ ہائرنگ کے لیے کل ہی پراسس مکمل ہوا ہے، عدالت نے کہا سیکرٹری ریلوے عدالت کودرست معلومات فراہم نہیں کررہے۔

عدالت نے درست معلومات فراہم نہ کرنے پرسیکرٹری ریلوے کو دوسرا نوٹس جاری کرتے ہوئے وزیراعلیٰ سندھ اورسندھ حکومت سے 2ہفتےمیں جواب مانگ لیا جبکہ سیکرٹری ریلوے کو بھی تحریری جواب جمع کرانے کا حکم دیا۔

سیکریٹری ریلوے کے بولنے کی کوشش پرچیف جسٹس نے برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا آپ کو سنیں گےپہلے اپنا جواب داخل کرائیں، سیکرٹری صاحب 2نوٹس آپ کوپہلے ہو چکے ہیں کیاتیسرا بھی کردیں؟ آپ نےہمارے لیے کچھ نہیں کیاجو بھی کیا عوام کےلیےکیا ہے۔

چیف جسٹس سپریم کورٹ کا کہنا تھا کہ سیکریٹری صاحب آپ نے کسی پر احسان نہیں کیا، یہ سب آپ کاکام ہےہماری آنکھوں میں دھول نہ جھونکیں، سیکرٹری صاحب آپ نےاپنی رپورٹ میں سب لکھ کردینا ہے۔

بعد ازاں سپریم کورٹ نے کیس کی سماعت 2ہفتے کے لیے ملتوی کر دی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں