The news is by your side.

Advertisement

ریلوےخسارہ کیس : سپریم کورٹ نے وزیر ریلوے شیخ رشید کو کل طلب کرلیا

اسلام آباد : سپریم کورٹ نے ریلوےخسارہ کیس میں وزیرریلوےشیخ رشید کو کل طلب کرلیا، چیف جسٹس نے ریمارکس میں کہا ریلوے سے کرپٹ پاکستان میں کوئی ادارہ نہیں، ریلوے میں کوئی بھی چیزدرست اندازمیں نہیں چل رہی۔

تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ میں چیف جسٹس گلزار احمد کی سربراہی میں ریلوےخسارہ سےمتعلق کیس کی سماعت ہوئی، دوران سماعت عدالت  نے ریلوےآڈٹ رپورٹ میں حقائق پر اظہاربرہمی کیا،چیف جسٹس پاکستان نے کہا آپ کاساراریکارڈمینوئل ہے، اس کامطلب ہے1لاکھ ریکوری  پر 25 ہزار ظاہر کیا جاتا ہے، مطلب ایک لاکھ ریکوری میں سے 75ہزارغائب ہوجاتےہیں۔

جسٹس اعجاز الاحسن کا کہنا تھا کہ اربوں روپے کا خسارہ ہورہا ہے ، آڈٹ رپورٹ نےواضح کردیا، ریلوےکانظام چل ہی نہیں رہا۔

چیف جسٹس نے ریمارکس میں کہا دنیابلٹ ٹرین چلاکرمزیدآگےجارہی ہے، جس کوریلوےوزارت درکارہے، اسےخود پہلے سفرکرناہوتاہے، روز حکومت  گرا رہے ہیں اور بنا رہے ہیں، وزارت سنبھالناان کاکام نہیں اورنہ ہی وہ وزارت سنبھال رہےہیں۔

جسٹس گلزار احمد کا کہنا تھا کہ ریلوےاسٹیشن اسٹیشنزہیں نہ ٹریک اورنہ ہی سگنل سسٹم، ریلوے سے کرپٹ پاکستان میں کوئی ادارہ نہیں، ریلوے میں  کوئی بھی چیزدرست اندازمیں نہیں چل رہی، آج بھی ہم پاکستان میں 18ویں صدی کی ریل چلارہےہیں۔

وکیل ریلوے نے بتایا کہ معاملےپرانکوائری اور2لوگوں کیخلاف کارروائی ہوئی، جس پر چیف جسٹس نے برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا چولہےمیں پھینک  دیں اپنی انکوائری ، پاکستان ریلوےکےسی ای اوآج پیش کیوں نہیں ہوئے۔

جس پر وکیل نے کہا سابق سی ای اوکونوٹس گیا ہے موجودہ کونہیں تو چیف جسٹس کا کہنا تھا کہ اہم کیس ہےموجودہ سی ای اوکوپیش ہوناچاہئےتھا، بلائیں  اپنےسی ای اوکو،کہاں ہیں وہ ؟۔وکیل ریلوے نے بتایا سی ای اوریلوے اس وقت لاہورمیں ہیں۔

سپریم کورٹ نے وزیرریلوےشیخ رشید سمیت سی ای او اور سیکریٹری ریلوے کو کل سپریم کورٹ میں طلب کرلیا اور سماعت ملتوی کردی۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں