The news is by your side.

Advertisement

کم عمر بچے کو تحفے میں دی گئی جائیداد واپس لی جا سکتی ہے؟ سپریم کورٹ کا اہم فیصلہ

اسلام آباد: کیا کم عمر بچے کو والد کی جانب سے تحفے میں دی گئی جائیداد واپس لی جا سکتی ہے؟ سپریم کورٹ نے اس سلسلے میں اہم فیصلہ جاری کر دیا۔

تفصیلات کے مطابق آج سپریم کورٹ میں جائیداد گفٹ کرنے سے متعلق ایک اہم کیس کا فیصلہ جاری ہوا ہے، جس میں عدالت نے قرار دیا کہ والد کی جانب سے کم عمر بچوں کو تحفے میں دی گئی جائیداد واپس نہیں لی جا سکتی۔

عدالتی کاغذات کے مطابق مظفرگڑھ کے ایک رہائشی کو 5 سال کی عمر میں والد نے 859 کنال زمین تحفے میں دی تھی، جس پر سوتیلے بھائی عابد حسین نے اس سے باپ کی تحفے میں دی گئی زمین واپس لینے کے لیے دعویٰ دائر کیا تھا۔

سپریم کورٹ کا آرڈیننس کے اجرا سے متعلق تاریخی فیصلہ

لاہور ہائی کورٹ نے اس کیس کا فیصلہ کرتے ہوئے عابد حسین کا دعویٰ مسترد کر دیا تھا، جس پر انھوں نے سپریم کورٹ سے رجوع کیا، سپریم کورٹ نے بھی عابد حسین کی لاہور ہائیکورٹ کے فیصلے کے خلاف اپیل مسترد کر دی۔

سپریم کورٹ نے فیصلے میں کہا کہ والد کی جانب سے تحفے میں دی گئی زمین کے لیے انتقال کی بھی ضرورت نہیں ہوتی، اسلامی تعلیمات کے مطابق تحفے میں دی گئی چیز واپس لینا بدترین عمل ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں