The news is by your side.

Advertisement

سینیٹ انتخابات ویڈیو اسکینڈل کیس: چیف الیکشن کمشنر نے مزید شواہد طلب کرلئے

اسلام آباد : سینیٹ انتخابات ویڈیو اسکینڈل کیس میں چیف الیکشن کمشنر نے مزید شواہد طلب کرتے ہوئے کہا مزید سماعت  اب سینیٹ الیکشن کے بعد ہوگی۔

تفصیلات کے مطابق الیکشن کمیشن میں سینیٹ انتخابات سے متعلق ویڈیو اسکینڈل پر سماعت ہوئی ، چیف الیکشن کمشنر کی سربراہی میں 5رکنی کمیشن نے سماعت کی۔

درخواست گزار ن لیگی رہنما مرتضی جاویداوروکیل جہانگیر جدون پیش ہوئے، مرتضیٰ جاوید نے الیکشن کمیشن سے ویڈیو کی ایف آئی اے سے تحقیقات کا مطالبہ کردیا۔

الیکشن کمیشن نے درخواست گزار سے مزید شواہدطلب کرلیے، چیف الیکشن کمشنر نے کہا شواہدجمع کرادیں،ضرورت کے مطابق کارروائی کریں گے، جس پر وکیل کا کہنا تھا کہ جتنےبھی لوگ ویڈیومیں بیٹھے ہیں وہ سب اراکین اسمبلی ہیں تو چیف الیکشن کمشنر نے کہا ویڈیومیں نظرآنےوالےکچھ لوگوں نےبعدمیں بیانات دیے۔

مرتضیٰ جاوید نے کہا کہ ویڈیوآنےکےبعد کےپی اراکین اسمبلی کوبرا بھلاکہاجارہاہے، چاہتےہیں معاملے کی انکوائری اور ذمےداران کےخلاف کارروائی ہو۔

مرتضی ٰ جاوید عباسی نے الزام عائد کیا کہ پرویزخٹک اوراسدقیصر معاملے میں ملوث تھے، ایک جماعت کااپنےہی اراکین کوپیسےدینابھی ہارس ٹریڈنگ ہے، ویڈیومیں نظرآنے والے2 ایم پی ایزبیان دینے کو تیار نہیں۔

ارشادقیصر کا کہنا تھا کہ چیئرمین سینیٹ الیکشن میں جوووٹ دیے گئے اس پر کیا خیال ہے، ممبر الیکشن کمیشن الطاف ابراہیم نے سوال کیا باپ جیت جائے تو الیکشن شفاف اور بیٹا جیت جائے تو دھاندلی؟ یہاں پر کوئی شکست ماننے کو تیار نہیں۔

چیف الیکشن کمشنر کا کہنا تھا کہ کیس کی مزیدسماعت اب سینیٹ الیکشن کے بعد ہوگی،بعد ازاں سینیٹ انتخابات سے متعلق ویڈیو اسکینڈل کیس کی سماعت 9 مارچ تک ملتوی کردی گئی

Comments

یہ بھی پڑھیں