The news is by your side.

Advertisement

اسکاٹ لینڈ ایک بار پھر برطانیہ سے آزادی کے لئے پر تولنے لگا

ایڈن برگ: اسکاٹ لینڈ نے برطانیہ سے علیحدگی کے لیے دوبارہ ریفرنڈم کرانے کا اعلان کردیا ہے۔

میڈیا رپورٹ کے مطابق اسکاٹ لینڈ کی فرسٹ منسٹر نے سن دوہزار تیئس کے اختتام تک برطانیہ سے علیحدگی کے لیے ریفرنڈم کرانے کا اعلان کیا ہے۔

نکولا اسٹرجن کا کہنا ہے کہ برطانیہ سے علیحدگی ان کے ایجنڈے میں شامل ہے لیکن یہ معاملہ اس سال پارلیمنٹ میں زیر بحث نہیں آئے گا، انہوں نے کہا کہ ہم یہ کام صرف اس وقت کریں گے جب کرونا کی وبا ختم ہوجائے گی۔

اسکاٹ لینڈ کی فرسٹ منسٹر نے کہا کہ کرونا کے دوران بھی ہمیں موقع ملا تو ہم سن دوہزار تئیس کے اختتام تک ریفرنڈم کراسکتے ہیں۔

واضح رہے کہ اسکاٹ لینڈ میں اس وقت برطانیہ سے آزادی کی تحریک اپنے تاریخی عروج پر ہے۔

یہ بھی پڑھیں: برطانیہ سے آزادی، اسکاٹ لینڈ کا بڑا قدم

یاد رہے کہ اس سے قبل سال دوہزار چودہ میں ہونے والے ریفرنڈم میں پچپن فیصد اسکاٹ لینڈ کے باشندوں نے برطانیہ کے ساتھ رہنے جب کہ پینتالیس فیصد نے علحیدگی کے حق میں ووٹ دیا تھا۔

سال دو ہزار چودہ کے بعد سال دو ہزار سولہ میں بھی اسکاٹ لینڈ میں 38 فیصد کے مقابلے میں 62 فیصد افراد نے یورپی یونین میں رہنے کے حق میں ووٹ دیا تھا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں