The news is by your side.

Advertisement

چند روز قبل لاپتہ ہونے والی ڈھائی سالہ بچی کی لاش برآمد

لاہور: صوبائی دارالحکومت میں لاہور میں دلخراش واقعہ پیش آیا ہے، جہاں چند روز قبل لاپتہ ہونے والی ڈھائی سالہ بچی کی لاش ملی ہے۔

ملک بھر میں بچوں کے لاپتہ ہونے کے بعد قتل کئے جانے کے واقعات تھم نہ ہوسکے، اس طرح کے واقعات نے ایک طرف انتظامیہ کے دعوؤں کی قلعی کھول دی ہے دوسری جانب والدین کو بھی عدم تحفظ کا شکار کردیا ہے۔

اسی طرح کا ایک اور واقعہ لاہور کے شاہدرہ ٹاؤن میں پیش آیا ہے، جہاں چند روز قبل لاپتہ ہونے والی ننھی ڈھائی سالہ فاطمہ کی لاش برآمد ہوئی ہے، پولیس ذرائع کا کہنا ہے کہ بچی کی لاش اس کے گھر کے قریب سے ملی ہے، لاش کو تحویل میں لینے کے بعد پوسٹ مارٹم کے لئے اسپتال منتقل کردیا گیا ہے، واقعے کے بعد گھر میں کہرام مچ گیا ہے۔ملک میں معصوم بچیوں کے اغوا کے بعد لاشیں ملنے کا واقعہ کوئی نیا نہیں ہے، دو ماہ قبل خیبر پختونخواہ کے شہر چارسدہ کے علاقے شیخ کلی سے ڈھائی سالہ معصوم زینب کو بھی اس طرح اغوا اور تشدد کے بعد بے رحمی سے قتل کردیا گیا تھا، قتل کرنے کے بعد سفاک ملزم نے لاش کو کھیتوں میں پھینک دیا تھا۔

رواں سال فروری میں شہر قائد کے علاقے شاہ فیصل کالونی میں گھر کے ٹینک سے 9 ماہ کی بچی کی لاش برآمد ہوئی تھی، مقدمے میں والدین کا کہنا تھا کہ 9 ماہ کی فاطمہ کو دو خواتین نے گھر میں گھس کر اغوا کیا، جس وقت فاطمہ کا اغوا ہوا والدہ دوسرے بچے کو نہلا رہی تھیں، اہل علاقہ نے بھی دو خواتین کو بچی ساتھ لے جاتے دیکھا گیا ۔چھ ستمبر کو کراچی میں ہی رونما ہونے والے دوسرے واقعے نے ہمارے ضمیر کو جھنجھوڑ دیا تھا، جہا عیسیٰ نگری کے قریب پیر بخاری کالونی میں خالی پلاٹ میں کچرے سے بچی کی لاش برآمد ہوئی، علاقہ مکینوں نے بتایا کہ بچی کی لاش انتہائی خراب حالت میں کچرا کنڈی سے ملی تھی، بطاہر لگتا ہے کہ بچی کو جلایا گیا ہے۔ بچی کی شناخت 5 سالہ مروہ کے نام سے ہوئی تھی۔

 

Comments

یہ بھی پڑھیں