The news is by your side.

Advertisement

شاہ زین بگٹی نے وفاقی کابینہ سے علیحدگی کا اعلان کردیا

اسلام آباد: تحریک عدم اعتماد سے قبل حکومت کو بڑا دھچکا، وزیراعظم کے معاون خصوصی برائے بلوچستان شاہ زین بگٹی نے حکومت کو خیر باد کہہ دیا۔

تفصیلات کے مطابق شاہ زین بگٹی نے وفاقی کابینہ سے مستعفی ہونے کا اعلان چیئرمین پاکستان پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری سے ملاقات کے بعد کیا۔

عوامی جمہوری وطن پارٹی کے رہنما شاہ زین بگٹی نے کہا کہ میں وفاقی کابینہ سے استعفیٰ دیتاہوں، اس جدوجہد میں ہم پی ڈی ایم کیساتھ کھڑے ہیں۔

شاہ زین بگٹی نے کہا کہ حکومت کے ساتھ ساڑھے تین سال چلے، وزیراعظم نے کہا تھا کہ میری توجہ پسماندہ علاقوں پر ہوگی، وزیراعظم بتا سکتے ہیں وہ کہاں تک پہنچے؟، وزیراعظم نہ بلوچستان ، جنوبی پنجاب نہ سندھ پہنچے، بلوچستان میں لوگوں کے اعتماد کو چوٹ پہنچی، میرا جو کام تھا میں نے ایمانداری سے نبھایا، دیوار پر سر مارنے کے علاوہ میں نے ہر چیز آزما لی۔

یہ بھی پڑھیں: وزارت اعلیٰ پنجاب: حکومت نے (ق) لیگ کو جواب دے دیا

جمہوری وطن پارٹی کے رہنما نے حکومت کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ غلط الفاظ کے چناؤ سے کوئی چیز ثابت نہیں ہوتی، اگر سب کرپٹ ہیں تو ثبوت سامنے رکھنے چاہئیں۔شاہ زین بگٹی کا کہنا تھا کہ حکومت کے ساتھ ساڑھے تین سال چلے، ہم نے ترقی کےلئے 100اسکالر شپس مانگی تھیں، بلوچستان کے اسپتالوں اور ٹرانسمیشن لائنز کیلئے 5،5کروڑ مانگے تھے آپ نے سیاست بچانے کیلئے جنوبی پنجاب میں500ارب کا اعلان کیا مگر وفاق بلوچستان کی ترقی کیلئے8ارب روپے نہیں دے سکا۔

اس موقع پر میڈیا سے گفتگو میں بلاول بھٹو نے حکومت پر اپنے اتحادیوں کو استعمال کرنے کا الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ شاہ زین بگٹی جیسے بہت سے لوگوں نے مسائل کےحل کی کوشش کی، وزیراعظم اور اسکی حکومت کا اپوزیشن کیساتھ جو سلوک تھا وہ سامنے ہے، تبدیلی کے نام پر ملک کے عوام اوراپوزیشن کو دھوکہ دیاگیا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں