سندھ ہائی کورٹ نے شرجیل میمن کی عبوری ضمانت منظور کرلی -
The news is by your side.

Advertisement

سندھ ہائی کورٹ نے شرجیل میمن کی عبوری ضمانت منظور کرلی

کراچی : سندھ ہائی کورٹ نے پیپلز پارٹی کے سابق وزیراطلاعات سندھ شرجیل انعام میمن کی کرپشن کیس میں عبوری ضمانت منظور کرلی ہے۔

تفصیلات کےمطابق آج بروز جمعرات سندھ ہائی کورٹ میں شرجیل میمن کرپشن کیس کی سماعت ہوئی جس میں ان کی جانب سے عبوری ضمانت کی درخواست کی جسے منظور کرلیا گیا۔

شرجیل میمن نے اس سے قبل بیرونِ ملک سے دو سال بعد واپسی پراسلام آباد ہائی کورٹ سے بھی اسی مقدمے میں حفاظتی ضمانت حاصل کی تھی۔

عدالت نے شرجیل میمن کو20لاکھ روپے کے مچلکے جمع کرانے کاحکم دیا تھا جبکہ ان کی حفاظتی ضمانت 2ہفتے کےلیے منظور کی گئی ہے۔


چوہدری نثار وفاقی وزیر ہیں، جج نہ بنیں، شرجیل میمن


شرجیل میمن کا کہناتھاکہ ریفرنس دو سال پہلے نہیں بنا ،اکتوبر2016میں دائر کیاگیا۔ان کاکہناتھاکہ جب میں بیرون ملک گیاتومیرےخلاف کوئی ریفرنس نہیں تھا۔

میں ںے خود کوعدالتوں کے سامنے پیش کیا


ضمانت کے بعد عدالت کے بعد صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے شرجیل میمن کا کہنا تھا کہ ہمیں عدالتوں میں صفائی پیش کرنے کا حق حاصل ہے ‘ ضمانت منظور ہونے پر اللہ کا شکر ادا کرتا ہوں۔

سابق صوبائی وزیر کا کہنا تھا کہ مجھ پر میری غیر موجودگی میں کیس بنائے گئے‘ میں نے خود کو عدالتوں کے سامنےپیش کیا ہے۔

انہوں نے یہ بھی کہا کہ کچھ نام نہاد سیاست داں ڈیل کا تاثر دینے کی کوشش کررہے ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ ڈاکٹرعاصم کی رہائی کو ڈیل کانتیجہ قراردیناانتہائی افسوسناک ہے۔

چوہدری نثار ای سی ایل کو جاگیر سمجھتے ہیں


شرجیل میمن نے وفاقی وزیرداخلہ چوہدری نثار علی خان کو اس موقع پر آڑے ہاتھوں لیا اور انہیں مناظرے کا چیلنج دیتے ہوئے کہا کہ بتایا جائے کہ کس قانون کے تحت میرانام ای سی ایل میں ڈالا گیا۔

پیپلز پارٹی کے ضمانت پر رہائی پینے والے رہنما کا یہ بھی کہنا تھا کہ وفاقی وزیرِ داخلہ نے ای سی ایل کو اپنی جاگیر سمجھ لیا ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں