The news is by your side.

Advertisement

شیخ رشید کے حلقے کا انتخاب ملتوی ہونے کا فیصلہ برقرار

لاہور: سپریم کورٹ نے راولپنڈی کے حلقہ این اے 60 کے انتخاب ملتوی کرنے کا فیصلہ برقرار رکھتے ہوئے انتخابی امیدوار شیخ رشید کی کل انتخاب کروانے کی درخواست مسترد کردی۔

تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ کے چیف جسٹس، جسٹس ثاقب نثار نے عوامی مسلم لیگ کے سربراہ شیخ رشید کی ان کے حلقے این اے 60 میں انتخاب نہ روکنے کی درخواست پر سماعت کی۔

سماعت کے بعد چیف جسٹس نے مذکورہ حلقے میں کل طے شدہ شیڈول کے مطابق انتخاب کروانے کی استدعا مسترد کرتے ہوئے لاہور ہائیکورٹ کے فیصلے کو برقرار رکھا۔

سپریم کورٹ نے وفاقی حکومت اور الیکشن کمیشن کو بھی نوٹس جاری کر دیے۔

چیف جسٹس نے کہا کہ واک اوور پر جانے کی بجائے الیکشن لڑیں، اپنے لیے نہیں بلکہ ووٹر کے لیے۔ شیح رشید دوسری سیٹ پر انتخابات لڑ رہے ہیں پتہ لگ جائے گا۔

اپنی دائر کردہ درخواست میں شیخ رشید نے مؤقف اختیار کیا تھا کہ الیکشن صرف امیدوار کی وفات کی صورت میں ملتوی کیے جا سکتے ہیں، الیکشن کمیشن کا فیصلہ الیکشن ایکٹ اور آئینی آرٹیکلز کی خلاف ورزی ہے۔

سماعت کے دوران چیف جسٹس ثاقب نثار کا کہنا تھا کہ اس اہم قانونی نقطے کی تشریح کے لیے کیس کی سماعت بعد میں کی جائے گی۔ حلقے کے ووٹر کو من پسند امیدوار کو ووٹ دینے سے محروم نہیں رکھا جا سکتا۔

واضح رہے کہ 2 روز قبل انسداد منشیات عدالت نے ایفی ڈرین کوٹا کیس میں مسلم لیگ ن کے رہنما اور این اے 60 کے امیدوار حنیف عباسی کو عمر قید کی سزا سنائی تھی۔

حنیف عباسی کی سزا کے بعد الیکشن کمیشن نے این اے 60 کا انتخاب ملتوی کردیا تھا جس کے خلاف شیخ رشید نے لاہور ہائیکورٹ میں درخواست دائر کی۔

لاہور ہائیکورٹ نے گزشتہ روز انتخاب ملتوی ہونے کے حوالے سے الیکشن کمیشن کا فیصلہ برقرار رکھتے ہوئے شیخ رشید کی درخواست خارج کر دی تھی۔

لاہور ہائیکورٹ سے درخواست خارج ہونے کے بعد شیخ رشید نے آج سپریم کورٹ سے رجوع کیا تھا تاہم یہاں سے بھی ان کی درخواست خارج کردی گئی۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں۔ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں