site
stats
پاکستان

سندھ اسمبلی میں تلخ کلامی‘ ڈپٹی اسپیکر کوعوام کا خیال آگیا

کراچی : سندھ اسمبلی کے اجلاس کے دوران امداد پتافی اور نصرت سحر کے درمیان تلخ جملوں کا تبادلہ ہوا، ڈپٹی اسپیکر شہلا رضا نے امداد پتافی کے نازیبا الفاظ کو اجلاس کی کاروائی سے حذف کردیا، خواتین اراکین نے صوبائی وزیر کے رویئے پر شدید تنقید کی۔

تفصیلات کے مطابق، جمعہ کے روزسندھ اسمبلی کا اجلاس ڈپٹی اسپیکرشہلا رضا کی زیرصدارت منعقد ہوا، اجلاس کی کاروائی کے دوران وزیر ورک اینڈ سروسز امداد پتافی اورمسلم لیگ فنکشنل کی خاتون رکن نصرت سحر سباسی کے درمیان تلخ جملوں کا تبادلہ ہوا۔اس موقع پرصوبائی وزیر کی جانب سے نازیبا کلمات کی ادائیگی کی گئی۔

نصرت سحرعباسی نے کہا کہ اگراسی طرح کا رویہ برقرار رہا تو میری زبان بھی پھسل جائے گی انہوں نے متنبہ کرتے ہوئے کہا کہ برائے مہربانی ایسا نہ کریں۔

خواتین اراکین سندھ اسمبلی نے امداد پتافی کے جملوں پر شدید اظہار مذمت کیا ، خواتین اراکین اسمبلی کا کہنا تھا کہ امدادپتافی نے ایسے الفاظ ادا کیے جو دہرائے نہیں جاسکتے ہیں‌۔

متحدہ قومی موومنٹ کی خاتون رکن عائشہ آفتاب کا کہنا تھا کہ امداد پتافی کے نے گری ہوئی حرکت کی ہے، مسلم لیگ نون کی سورٹھ تھیبو نے کہا کہ امدادپتافی نےایوان کووڈیروں کی اوطاق سمجھ لیا ہے ، انہوں نے کہا کہ پیپلز پارٹی کی قیادت کوامداد پتافی کے خلاف کارروائی کرنی چاہیے۔

ڈپٹی اسپیکر شہلا رضا نے کہا کہ میں نے نازیبا الفاظ اجلاس کی کاروائی سے حذف کردئیے ہیں ،انہوں نے ارکان سندھ اسمبلی کو ‘خاموش رہنے کی ہدایت کی، اس موقع پر انہوں نے یہ بھی کہا کہ ’عوام دیکھ رہے ہیں۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top