The news is by your side.

سندھ کو معاہدے کے مطابق پانی نہ ملنے پر فصلوں کو نقصان پہنچا: محکمہ زراعت

کراچی: محکمۂ زراعت سندھ نے فصلوں میں کمی سے متعلق رپورٹ جاری کر دی، رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ صوبے کو معاہدے کے مطابق پانی نہ ملنے پر فصلوں کو نقصان پہنچا۔

تفصیلات کے مطابق صوبہ سندھ میں فصلوں کی کمی کے حوالے سے محکمۂ زراعت نے رپورٹ جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ سندھ کو پانی کم ملنے کی وجہ سے فصلیں متاثر ہوئیں۔

کپاس، گنے اور چاول کی کاشت کم ہوئی

رپورٹ

محکمۂ زراعت نے رپورٹ میں کہا ہے کہ صوبے میں کم پانی کی وجہ سے کپاس، گنے اور چاول کی کاشت کم ہوئی، جس سے صوبے کو شدید نقصان کا سامنا کرنا پڑا ہے۔

سندھ کے وزیرِ زراعت محمد اسماعیل راہو نے کہا کہ پانی کی قلت کے باعث سندھ کو اربوں روپے کا نقصان ہوا ہے، وفاق نے ہمیشہ پانی کے معاملے پر سندھ کو دیوار سے لگایا۔

محمد اسماعیل راہو کا کہنا تھا کہ وفاق نے سندھ کے کاشت کاروں کے لیے کوئی پالیسی نہیں بنائی، ضرورت ہے کہ وفاقی حکومت ملک کی زراعت پر توجہ دے۔


یہ بھی پڑھیں:  نواز شریف نے دوسرے صوبے کے حق پر ڈاکہ ڈالا اور پانی چوری کیا: فیصل واوڈا


خیال رہے کہ تین ہفتے قبل ایک رپورٹ میں یہ بھی کہا گیا تھا کہ دریائے سندھ میں پانی کی قلت کا مسئلہ انتہائی سنگین ہو گیا ہے، پانی کی یہ قلت ربیع کے موسم میں مزید بڑھ جائے گی جس کے باعث گندم سمیت کئی فصلیں اگانے کے لیے کاشت کاروں کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑے گا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں