The news is by your side.

Advertisement

‘آج تک وادئ سندھ کے کسی بھی آثار قدیمہ سے کوئی جنگی ہتھیار نہیں ملا’

کراچی: وزیر تعلیم و ثقافت سردار علی شاہ نے سندھ کی پُر امن ثقافت کے حوالے سے ایک تقریب میں کہا ہے کہ ‘آج تک وادئ سندھ کے کسی بھی آثار قدیمہ سے کوئی جنگی ہتھیار نہیں ملا۔’

وہ کراچی یونیورسٹی بزنس اسکول میں منعقدہ سیمینار سے خطاب کر رہے تھے، انھوں نے پاکستان کو سندھ کا حصہ قرار دیتے ہوئے کہا آج کا پاکستان تاریخی طور پر وادئ سندھ ہی تھا۔

انھوں نے کہا تاریخی طور پر وادئ سندھ ہی اس خطے کی اصل شناخت ہے، انڈس سے ہی انڈیا نکلا ہے، کشمیر بھی تاریخی طور پر پاکستان کا اَن مِٹ حصہ ہے، یہ بات بھارتی وزیر اعظم جواہر لال نہرو نے بھی اپنی کتاب میں لکھی ہے۔

ساڑھے 4 ہزار سال قدیم شہر کا نام تبدیل کرنے کی منظوری

سردار علی شاہ نے کہا ہم امن کے داعی ہیں اور کبھی کسی قوم پر حملہ آور نہیں ہوئے، پاکستان کی جانب سے اقوام عالم کو اپنی امن پرستی کا اس سے بڑا کیا ثبوت دیا جا سکتا ہے کہ آج تک وادئ سندھ کے کسی بھی سائٹ سے کوئی جنگی ہتھیار نہیں ملا ہے۔

صوبائی وزیر کا کہنا تھا کہ ہم تاریخ میں کبھی حملہ آور نہیں رہے، ہمیں شاہ لطیف، بابا بھلے شاہ، سلطان باہو اور شاہ حسین کے پیغام کو بھی پڑھنا پڑے گا، صدیوں پہلے خواجہ معین الدین اور نظام الدین اولیاء کے صوفی پیغامات نے برصغیر میں امن کی آبیاری کی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں