The news is by your side.

Advertisement

سعودی عرب : سورج گرہن کب ہوگا؟ ماہر فلکیات نے بتادیا

ریاض : ماہر فلکیات نے کہا ہے کہ رواں سال کا پہلا سورج گرہن 21جون کو ہوگا، تین گھنٹے جاری رہنے والا یہ سورج گرہن سعودی عرب اورعرب ممالک سمیت دنیا بھر میں دیکھا جاسکے گا۔

تفصیلات کے مطابق سعودی عرب اورعرب ممالک سمیت دنیا بھر میں رواں سال 2020 کا پہلا سورج گرہن اتوار 21 جون کو ہوگا جسے یورپ کے جنوب مشرق، براعظم ایشیا، شمالی آسٹریلیا، براعظم افریقہ، انڈونیشیا، بحر الکاہل اور پیسفک کے ملکوں میں دیکھا جاسکے گا۔

یہ سورج گرہن عرب ممالک میں سے سعودی عرب، مصر، سوڈان، یمن اور سلطنت عمان میں بھی نظر آئے گا، جدہ میں فلکیاتی علوم کی انجمن کے سربراہ انجینیئر ماجد ابو زاھرہ نے بتایا ہے کہ سورج گرہن 21جون کو سعودی عرب کے بیشتر علاقوں میں بھی نظر آئے گا۔

سعودی وقت کے مطابق سورج گرہن صبح 8 بج کر 13 منٹ پر شروع ہوگا اور تین گھنٹے جاری رہے گا۔ مصر سمیت دیگر عرب ملکوں میں جزوی طور پر سورج گرہن دیکھا جاسکے گا۔

براعظم ایشیا کے شمالی اور مشرقی ملکوں جبکہ براعظم افریقہ کے جنوبی اور مغربی علاقوں میں یہ گرہن نظر نہیں آئے گا۔ کانگو، وسطی افریقہ، ایتھوپیا، پاکستان، انڈیا، چین میں گرہن دیکھا جاسکے گا۔ اس کا دورانیہ پانچ گھنٹے چالیس منٹ تک ہوگا۔
عرب ممالک میں سورج گرہن جزوی طور پر دو گھنٹے تک دیکھا جاسکے گا۔

الیوم السابع کے مطابق قاہرہ میں جزوی سورج گرہن صبح 6 بجکر 24 منٹ پر شروع ہوگا اور7 بجکر 20 منٹ پر نقطہ عروج پر پہنچ جائے گا، سال رواں کے دوران سورج گرہن دوسری مرتبہ 14 دسمبر کو ہوگا۔

دریں اثنا سعودی ماہرین فلکیات نے کہا ہے کہ ’گرہن کے دوران زیادہ دیر تک سورج کی طرف دیکھنا اور سولر فلٹر استعمال نہ کرنا آنکھوں کے لیے نقصان دہ ہوسکتا ہے۔‘

ماہرین کے مطابق سورج گرہن کے دوران سیلفی لینے کی کوشش نقصان دہ ہوسکتی ہے، عام سن گلاسز کے بجائے خصوصی ڈیزائن کردہ سولر فلٹر گلاسز استعمال کیے جائیں جو مہلک شعاعوں کو روکتے ہیں،کیمرے کے لینس کے لیے بھی خصوصی طور پر تیار کردہ فلٹر استعمال کیا جائے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں