The news is by your side.

Advertisement

وھیل کے منہ سے زندہ سلامت باہر آنے والا خوش قسمت

جسے اللہ رکھے اسے کون چھکے، جنوبی افریقہ کا ٹور آپریٹر 45 فٹ لمبی وہیل کے منہ سے زندہ نکل آیا، وھیل کے منہ میں انہوں نے کم از کم دو منٹ گزارے۔

تفصیلات کے مطابق رینر شمف نامی شخص سمندر میں سارڈین نامی مچھلیوں کے تیزی سے حرکت کرنے کا منظر فلما رہا تھا کہ اچانک ایک طویل الجثہ وھیل اسے نگل گئی۔

یہ واقعہ جنوبی افریقہ کے پورٹ الزبتھ ہاربر پر پیش آیا جہاں کثیر تعداد میں پین گوئن، اودھ بلاؤ، ڈولفن ، وھیل اور شارک موجود ہوتی ہیں۔
ان کا کہنا کہ اچانک ایک بڑی وہیل مچھلی نے انہیں نگل لیا۔

انہوں نے اپنے ہاتھوں سے اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ کہ اگر کوئی 15 ٹن سے زائد بھاری بھرکم مخلوق آپ کو اپنے جبڑے میں لے لے تو آپ کو اندازہ ہوگا کہ اس دنیا میں ہم انسان کتنے چھوٹے ہیں۔

اکیاون سالہ شمف کے مطابق وہ اور ان کے دو ساتھی پانی میں ہی تھے جب وھیل انہیں سالم نگل گئی تھی اور یہ دورانیہ کم ازکم دو منٹ کا تھا جس کے بعد اس نے انہیں باہر اگل دیا۔

انہوں نےمزید کہا کہ فلم بناتے وقت ان کی تمام تر توجہ شارکس پر مرکوز تھی کہ جب شار ک آپ کے آس پاس ہوں تو آپ کو دھیان کرنا ہوتا ہے کہ وہ کہاں ہے ، اگر وہ آپ کی پشت پر آجائے تو یہ خطرناک ہوتا ہے۔ ابھی ہم فلم بنا رہی رہے تھے کہ اچانک اندھیرا چھا گیا۔ میں خوف زدہ تھا لیکن میں نے اس لمحے خوف کا اظہار کرنے کے بجائے خود پر قابو پائے رکھا۔

ان کا کہنا ہے کہ جس شارک نے انہیں نگلا وہ کم از کم 45 فٹ طویل اور 20 ٹن وزنی تھی ۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں