The news is by your side.

Advertisement

جنوبی کوریا نے شمالی کوریا کے میزائل تجربے پر سوالات اٹھا دیئے

جنوبی کوریا نے گزشتہ روز شمالی کوریا کی جانب سے کیے جانے والے میزائل تجربے سے متعلق دعویٰ کیا ہے کہ یہ تجربہ مبالغہ آمیز ہے۔

اس حوالے سے جنوبی کوریا کی وزارت دفاع نے ایک بیان میں کہا ہے کہ شمالی کوریا کا رواں ہفتے ہائپر سونک میزائل کامیابی سے لانچ کرنے کے دعوے میں مبالغہ آرائی سے کام لیا گیا۔

یہ بات وزارت دفاع نے بدھ کو لانچ کیے گئے میزائل کے ابتدائی تجزیے کے نتائج کے بعد کہی۔ ترجمان وزارت دفاع کا کہنا ہے کہ تجزیے سے پتا چلا ہے کہ میزائل نے شمالی کوریا کے دعویٰ کردہ سات سو کلومیٹر سے کم پرواز کی۔

تجزیے کے مطابق میزائل کی رفتار آواز کی رفتار سے پانچ گنا سے متجاوز ضرور ہوئی جو ہائپر سونک باور کی جاتی ہے تاہم پرواز کے دوران اس نے رفتار کی یہ سطح برقرار نہیں رکھی۔

وزارت دفاع کا یہ بھی کہنا ہے کہ میزائل نے شمالی کوریا کے دعوے کے برعکس دائیں بائیں حرکت پذیری کا مظاہرہ بھی نہیں کیا۔

تجزیے میں کہا گیا ہے یہ میزائل غالباً اُس قسم کا تھا جس کی نقاب کشائی گزشتہ سال اکتوبر کی فوجی نمائش میں کی گئی تھی۔

مزید پڑھیں : امریکی دھمکیوں کے با وجود شمالی کوریا کا بیلسٹک میزائل کا تجربہ

یاد رہے کہ گزشتہ سال ماہ اکتوبر میں  شمالی کوریا نے ایٹمی صلاحیت کے حامل سپر سونک میزائل اور کروز میزائل کے تجربات کیے تھے تاہم اس بار بیلسٹک میزائل کے تجربے کیے گئے ہیں۔

دوسری جانب شمالی کوریا کا واضح طور پر کہنا ہے کہ جب تک امریکہ پیانگ یانگ کے خلاف اپنی مخالفانہ پالیسی کو ترک نہیں کرتا اس وقت تک اپنے جوہری اور میزائل پروگرام کو جاری رکھے گا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں