site
stats
عالمی خبریں

جنوبی کوریاکی خاتون صدرعہدہ چھوڑنےکےلیےتیار

سیول: جنوبی کوریاکی صدرنے پارلیمان سے کہاہےکہ وہ انہیں عہدہ چھوڑنےکےلیے راستہ تلاش کرنےمیں مدد کرے۔

تفصیلات کےمطابق جنوبی کوریا کی صدر پاک گن ہے نے اپنی سہیلی چوئی سون سل کو سیکیورٹی کلیئرنس نہ ہونے کے باوجود سرکاری دستاویزات دیکھنے کی اجازت دی تھی۔

واقعےکےمنظرعام پرآنےکےبعد ملک میں مظاہروں کا آغاز ہوا اور ان سے متستعفی ہونے کا مطالبہ کیا گیا۔

خیال رہے کہ صدر نے ٹی وی پر قوم سے دو بار معافی بھی مانگی تاہم لاکھوں افراد کے مظاہروں کے باوجود وہ مستعفی ہونے پر تیار دکھائی نہیں دے رہی تھیں۔

صدر پارک گن کےاسکینڈل کے بعد سے اب تک جنوبی کوریا کی صدر تین مرتبہ قوم سے خطاب بھی کر چکی ہیں۔منگل کو ٹی وی پر خطاب کرتے ہوئے جنوبی کوریا کی صدر کا کہنا تھا کہ وہ مستعفی ہو جائیں گی۔

مزید پڑھیں:جنوبی کوریا میں لاکھوں افراد کا صدرکے خلاف مظاہرہ

یاد رہے کہ صدر کی سہیلی چوئی سون سل دھوکہ دہی اور طاقت کے ناجائز استعمال کے الزامات میں زیر حراست ہیں۔ان پر جنوبی کوریا کی کمپنیوں سے بھی بھاری رقم بٹورنے کے الزامات ہیں۔

واضح رہے کہ جنوبی کوریا میں صدر کے خلاف ایک ماہ سے زائد عرصے سے جاری ان مظاہروں کو1980 کی دہائی کی جمہوریت نواز مظاہروں کے بعد سب سے بڑے مظاہرے قرار دیا جا رہا ہے۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top