The news is by your side.

Advertisement

نشوہ کیس میں برطرف ایس پی طاہر نورانی کی کراچی پولیس میں واپسی

کراچی: دارالصحت اسپتال میں جاں بحق بچی کے والد کے ساتھ غلط سلوک پر ہٹائے گئے ایس پی طاہر نورانی کی کراچی پولیس میں واپسی ہو گئی ہے۔

تفصیلات کے مطابق کراچی کے دارالصحت اسپتال کیس میں عہدے سے برطرف کیے جانے والے ایس پی گلشن اقبال طاہر نورانی کی خدمات ایڈیشنل آئی جی کراچی کے سپرد کر دی گئیں۔

جنید شیخ کو ایس ایس پی انویسٹی گیشن کورنگی تعینات کر دیا گیا، جب کہ عبدالرحیم شیرازی کو ایس ایس پی اے وی سی سی تعینات کیا گیا ہے۔

یاد رہے کہ ایس پی طاہر نورانی کو 18 اپریل کو اس وقت عہدے سے برطرف کیا گیا جب انھوں نے اسپتال میں غلط علاج کے سبب معذور اور بعد ازاں جاں بحق ہونے والی بچی نشوہ کے والد کو اسپتال انتظامیہ کے خلاف کارروائی سے روکنے کے لیے دھمکیاں دی تھیں۔

یہ بھی پڑھیں:  نشوہ کے والد کو دھمکیاں، ایس پی طاہرنورانی عہدے سے برطرف

اس وقت کے ایڈیشنل آئی جی کراچی امیر شیخ نے ایس پی طاہر نورانی کو ان کے عہدے سے ہٹانے کے احکامات صادر کیے تھے، اس سلسلے میں انھیں ڈی آئی جی ایسٹ عامر فاروقی نے تفصیلی رپورٹ پیش کی تھی۔

ایڈیشنل آئی جی نے آئی جی سندھ کلیم امام کے نام خط لکھ کر سفارش کی تھی کہ طاہر نورانی کے خلاف محکمہ جاتی کارروائی کی جائے۔

نو ماہ کی بچی نشوہ دارالصحت اسپتال میں ڈائیریا کے مرض میں ایڈمٹ کی گئی تھی ، اسپتال میں اسے غلط انجکشن دیا گیا جس کے باعث اس کی طبیعت بگڑ گئی، بعد ازاں پیرالائز ہوگئی اور آخر کار ڈاکٹروں کی بھرپور کوششوں کے باوجود 22 اپریل کو خالق حقیقی سے جا ملی۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں