The news is by your side.

Advertisement

روس کی سنگل ڈوز ویکسین کی بڑی افادیت منظر عام پر

کرونا وبا کے خلاف روس کی سنگل ڈوز ویکسین کی بڑی افادیت سامنے آئی ہے۔

طبی جریدے دی لانسیٹ میڈیکل جرنل میں جاری ٹرائلز کے نتائج کے مطابق روس کی ایک خوراک والی اسپوٹنک لائٹ ویکسین استعمال میں محفوظ اور ٹھوس مدافعتی ردعمل پیدا کرتی ہے بالخصوص ان افراد میں جو پہلے ہی کووڈ نائنٹین کا سامنا کرچکے ہوں۔

یہ بات اس ویکسین کے پہلے اور دوسرے مرحلے کے ٹرائلز کے نتائج میں سامنے آئی، یہ دو خوراکوں والی اسپوٹنک وی ویکسین کا ایک خوراک والا ورژن ہے جس کو پہلے ہی روس میں استعمال کیا جارہا ہے۔

گمالیا انسٹیوٹ کے ماہرین نے اس ویکسین کو تیار کیا ہے، مگر پہلی بار کسی معروف طبی جریدے میں اس پر ہونے والی ابتدائی تحقیق کے نتائج شائع ہوئے ہیں جس کا مقصد اسے دیگر ممالک کو فروخت کرنا ہے۔

یہ بھی پڑھیں: لانگ کووڈ سے متعلق ایک اور انکشاف

ان ماہرین نے سینٹ پیٹرزبرگ کے 18 سے 59 سال کی عمر کے 110 رضاکاروں کو ٹرائلز کا حصہ بنایا تھا جن کو یہ ویکسین جنوری 2021 میں استعمال کرائی گئی تھی، ان رضاکاروں میں ویکسین کے مضر اثرات اور مدافعتی نظام کے ردعمل کی جانچ پڑتال کی گئی تھی۔

ٹرائل میں دریافت ہوا کہ یہ ویکسین کرونا وائرس کی اصل قسم کو ناکارہ بنا دیتی ہے جبکہ الفا اور بیٹا اقسام کے خلاف اس کی افادیت معمولی سی کم ہوتی ہے۔

روس نے پہلے بتایا تھا کہ تحقیق سے ثابت ہوا ہے کہ اسپوٹنک لائٹ کرونا کی قسم ڈیلٹا کے خلاف 70 فیصد تک مؤثر ہے۔

تحقیق میں بتایا گیا کہ اسپوٹنک لائٹ نہ صرف پرائمری ویکسینیشن کے لیے زیرغور لایا جانا چاہیے بلک یہ بوسٹر ڈوز کے طور پر بھی کارآمد ہتھیار ثابت ہوسکتی ہے۔

حال ہی میں روس کے وزیر صحت نے بھی وزارت صحت کو ڈیلٹا قسم کے پھیلاؤ کے مدنظر اسپوٹنک لائٹ کو صرف بوسٹر کے طور پر استعمال کرنے کا مشورہ دیا تھا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں