The news is by your side.

Advertisement

سیاسی مخالفین کی جاسوسی پر بھارت میں کھلبلی

نئی دہلی: اسرائیلی سوفٹ ویئر سے بھارتی اپوزیشن لیڈروں کی جاسوسی پر انڈیا میں کھبلی مچ گئی ہے اور مودی سرکار کو شدید تنقید کا سامنا ہے۔

بھارتی میڈیا رپورٹ کے مطابق اسرائیلی سوفٹ ویئر کی مدد سے جاسوسی کے انکشاف پر کانگریس رہنما راہول گاندھی نے مودی سرکار پر کڑی تنقید کی اور ٹوئٹ کیا کہ وہ آپ کے فون پر سب کچھ پڑھ رہے ہیں۔

بھارت میں حزب اختلاف کی جماعت کانگریس کی رہنما سونیا گاندھی کی بیٹی پریانکا گاندھی نے بھی مودی سرکار کے اقدامات پر سوالات اٹھاتے ہوئے ٹوئٹ کیا کہ پیگاسس انکشافات نفرت انگیز ہیں،مودی سرکار نے شہریوں کی آئینی آزادی کے حق پرسنگین حملہ کیا ہے۔

ممبئی کی صحافی تنظیم نے بھی مخالفت کرتے ہوئےکہا کہ پیگاسس سوفٹ ویئر صرف حکومتوں کو ہی فروخت کئے جاتے ہیں،حکومت نے سوفٹ ویئر کےاستعمال کا اقراریا انکار نہیں کیا، ہم صحافیوں کےفون کی جاسوسی کرنےکی شدیدمذمت کرتےہیں،معاملے کی آزادانہ تحقیقات ہونہی چاہیئے۔

یہ بھی پڑھیں: مودی سرکار مخالفین کو کیسے گرفتار کرتی تھی؟ برطانوی اخبار نے بھانڈا پھوڑ دیا

دوسری جانب یوتھ کانگریس کی جانب سے نوجوانوں نے جاسوسی پرحکومت کےخلاف احتجاج بھی کیا۔

واضح رہے کہ برطانوی اخبار گارڈین نے پانی رپورٹ میں ہوشربا انکشاف کرتے ہوئے لکھا تھا کہ مودی سرکار نے بھی مخالفین کیخلاف اسرائیلی ہیکنگ سافٹ ویئر استعمال کیا،

برطانوی اخبار گارڈین کے مطابق اسرائیلی ہیکنگ سافٹ ویئر کی مدد سے مودی سرکار نے مخالفین کا ڈیٹا ہیک کیا، مودی سرکار نے یونیورسٹی کے سرگرم رکن عمر خالد کا فون ہیک کرایا اور اس پر بغاوت کا الزام لگا کر گرفتار کرکےجیل میں ڈالا،اس کے علاوہ مودی سرکار نے نچلی ذات کیلئےآواز اٹھانیوالے رائٹرز، وکلا اور اداکاروں کے فونز ہیک کرائے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں