The news is by your side.

Advertisement

ایس ایس پی شکارپور کی رپورٹ میں امتیاز شیخ کے خلاف مزید انکشافات سامنے آگئے

کراچی: ایس ایس پی شکارپور کی رپورٹ میں مزید انکشافات سامنے آئے ہیں، رپورٹ میں امتیاز شیخ کے خلاف سنگین الزامات لگائے گئے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق ایس ایس پی شکارپور ڈاکٹر رضوان نے اپنی رپورٹ میں پیپلزپارٹی رہنما امتیاز شیخ کے خلاف سنگین الزامات لگائے ہیں، رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ امتیاز شیخ کے بیٹے فراز شیخ کے گن مین، ڈاکوؤں کو 500 گولیاں بھی فراہم کرچکے ہیں، سیاسی اثر و رسوخ رکھتے ہوئے 115 شیخ برادری کے افراد کو پولیس میں بھرتی کروایا گیا۔

ایس ایس پی نے رپورٹ میں انکشاف کیا کہ امتیاز شیخ مخالف ووٹرز کو ڈرا دھمکا کر ووٹ بھی حاصل کرتے رہے، تیغو خان تیغانی اور بیلو خان اغوا ہونے والے شہریوں کو کچے کے علاقے میں رکھتے تھے، گن مین علی نواز شیخ پر مختلف تھانہ جات میں ڈکیتی ، قتل اور ریپ کے 30 مقدمات درج ہیں۔

مزید پڑھیں: صوبائی وزیر امتیاز شیخ کا ایس ایس پی کے خلاف عدالت جانے کا اعلان

رپورٹ کے مطابق گن مین علی نواز، کرمنل ایوب تیغانی کا گولیوں کے حوالے سے رابطہ بھی ہوا تھا، گن مین علی نواز انسپکٹر رفیع اللہ کے قتل میں بھی ملوث ہے، داؤد شیخ، اتو شیخ کرمنل مخالف ووٹرز کو ڈرا دھمکا کر ووٹ بھی حاصل کرتے رہے ہیں۔

ایس ایس پی کی رپورٹ کے مطابق ڈرگ پیٹلرز امتیاز اور مقبول شیخ کی گاڑیوں میں، اسلحہ، گولیاں، منشیات منتقل کرتے تھے، امتیاز شیخ ضلع شکارپور میں پسندیدہ افسر لگانا چاہتے تھے، ان کے اسکواڈ میں موجود اہلکار غوث بخش کے خلاف 20 سنگین مقدمات موجود ہیں۔

ایس ایس پی نے رپورٹ میں بتایا کہ سردار تیغو خان تیغانی امتیاز شیخ کا رائٹ ہینڈ ہے اور اس کے شکارپور، کندھ کوٹ، کشمور اور سکھر میں کرمنل کیمپ قائم ہیں، گھڑی تیغو کے علاقے میں اغوا کیے جانے والے شہریوں کو چھپایا جاتا ہے، تیغانی گروپ کراچی میں بھی اغوا میں ملوث رہا ہے، کراچی کے تاجر سلیم سورٹھیا کو بھی تیغانی گروہ نے اغوا کرکے کچے کے علاقے میں منتقل کیا تھا۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں