The news is by your side.

کم لاگت میں گھروں کی تعمیر ممکن ہوگی: اسٹیٹ بینک

اسلام آباد: اسٹیٹ بینک آف پاکستان اور  پاکستان مورگیج ری فنانس کمپنی کے مابین معاہدہ طے پاگیا جس کے تحت ملک میں کم لاگت میں گھروں کی تعمیر کے لیے پی ایم آر  اگلے ماہ سے کام شروع کر دے گی۔

تفصیلات کے مطابق اسٹیٹ بینک، بینکوں کے صدور اور شیئرز ہولڈرز کے مابین معاہدے پر دستخط کراچی کے مقامی ہوٹل میں ہوئے، پی ایم آر سی کی تقریب میں نیشنل بینک کے صدر سعید احمد سمیت دیگر بینکوں کے صدور نے بھی شرکت کی۔

تقریب سے خطاب کرتے ہوئے ڈپٹی گورنر اسٹیٹ بینک جمیل احمد کا کہنا تھا کہ سندھ کچی آبادی محکمے کے مطابق کراچی میں 562 کچی آبادیاں ہیں، جہاں پر  بنیادی سہولیات نہ ہونے کی وجہ سے بیماریاں پھیلتی ہیں، اسٹیٹ بینک کے وژن 2020 میں ایسی بستیوں میں آباد کاری کے ساتھ ہاؤسنگ، زراعت اور ایس ایم ای بنیادی نکات میں شامل ہے۔

شرح سود میں چھ فیصد اضافہ، اسٹیٹ بینک کی نئی مانٹیری پالیسی کا اعلان

چیئرمین پی ایم آر سی رحمت علی حسنی نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ متوسط و کم آمدنی والے افراد کی ضروریات کو پورا کرے گا، پی ایم آر سی میں نجی شعبے کی شمولیت 51 فیصد ہے جبکہ ورلڈ بینک نے 140 ملین ڈالرز کی کریڈٹ لائن دی ہے۔

پاکستان مورگیج ری فنانس کمپنی کے انتظامی سربراہ مسٹر روپن نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ گھروں کی لاگت کا معاملہ بہت اہم ہے، گھر بنانے کی لاگت کم کرنے کے لیے اقدامات کرنا ہوں گے، پاکستان میں سالانہ 4 سے 6 لاکھ گھروں کی طلب بڑھ رہی ہے، پاکستان مورگیج ری فنانس کمپنی آئندہ ماہ سے کام شروع کردے گی۔

دس ہزار کا نوٹ متعارف نہیں کرایا جارہا، اسٹیٹ بینک

عالمی بینک کی جانب سے پاکستان میں موجود نمائندے ناموس ظہیر کا تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہنا تھا کہ پاکستان میں ایک کروڑ سے زائد گھروں کی کمی کا سامنا ہے، ملک میں دو فیصد خواتین کے نام جائیداد کی ملکیت ہے۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں، مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں