The news is by your side.

میں نے بہت آوازیں دیں لیکن پاپا نے جواب نہ دیا، لانگ مارچ میں فائرنگ سے جاں بحق معظم کے بیٹے کے بیان نے سب کو رلا دیا

وزیرآباد: لانگ مارچ میں فائرنگ سے جاں بحق ہونے والے مقتول معظم کے بیٹے کے بیان نے سب کو رلادیا اور کہا میں نے آوازیں دیں لیکن پاپا نے جواب نہ دیا۔

تفصیلات کے مطابق لانگ مارچ میں فائرنگ سے جاں بحق ہونے والے مقتول معظم کے 8 سالہ بیٹے علی حسن نے اے آر وائی نیوز سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ پاپا نے ہم بھائیوں سے پوچھا لانگ مارچ میں جانا ہے، میرے حامی بھرنے پر پاپا ہمیں لانگ مارچ پر لے گئے۔

علی حسن کا کہنا تھا کہ ہم لانگ مارچ میں پہنچے تو ایک آدمی عمران خان کو گولی مار رہا تھا، میرے پاپا نے پستول والے کو پکڑنے کی کوشش کی۔

مقتول معظم کے بیٹے نے بتایا کہ پستول والے نے میرے پاپا کو گولی مار دی، گولی لگنے سے میرے پاپا زمین پر گر گئے، میں نے آوازیں دیں لیکن پاپا نے جواب نہ دیا۔

یاد رہے عمران خان پر قاتلانہ حملے میں ابتسام نامی نوجوان نے فائرنگ کرنے والے ملزم کو پیچھے سے پکڑا، جس کے بعد ملزم بھاگا تو معظم گوندل نے اسے پکڑنےکی کوشش کی تو ملزم نے فائرنگ کردی۔

گولی معظم کے سرمیں لگی وہ وہیں گر کر جاں بحق ہوگیا، جس کے بعد بھگدڑ مچ گئی، لوگ جان بچا کر بھاگنے لگے لیکن معظم کے تین معصوم بچے باپ کو اٹھانے کی کوشش کرتے رہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں