The news is by your side.

Advertisement

سپریم کورٹ کا اوورسیز پاکستانیزکمشنرپنجاب کا نام ای سی ایل میں ڈالنے کاحکم

لاہور: سپریم کورٹ لاہوررجسٹری نے اوور سیزپاکستانیز کمشنر پنجاب کا نام ای سی ایل میں ڈالنے کا حکم دے دیا۔

تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ لاہور رجسٹری میں چیف جسٹس پاکستان کی سربراہی میں 2 رکنی بینچ نے پنجاب انسٹی ٹیوٹ آف کارڈیالوجی میں بے ضابطگیوں کے خلاف ازخود نوٹس کی سماعت کی۔

سپریم کورٹ کے حکم پر صوبائی وزیرصحت خواجہ سلمان رفیق اور پی آئی سی کے سربراہ ندیم حیات ملک عدالت میں پیش ہوئے۔

چیف جسٹس نے سماعت کے دوران استفسار کیا کہ دہری شہریت رکھنے والے کو کیسے اوورسیز کمشنراور پی آئی سی میں لگایا گیا، انہوں نے اوورسیزکمشنر سے استفسار کیا کہ تمہاری تنخواہ کتنی ہے؟ جس پر افضال بھٹی نے جواب دیا کہ میری تنخواہ ساڑھے پانچ لاکھ روپے ہے۔

چیف جسٹس میاں ثاقب نثار نے ریمارکس دیے کہ چیف سیکرٹری ایک لاکھ 80 ہزار لے رہا ہوں، تمہیں سرخاب کے پرلگے ہیں۔

چیف جسٹس آف پاکستان نے صوبائی وزیرصحت خواجہ سلمان کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ خواجہ صاحب آپ کے ہوتے ہوئے یہ سب کیسے ہوگیا؟ دل کرتا ہے وزیراعلٰی کو بلا کرساری کارروائی دکھاؤں۔

چیف جسٹس میاں ثاقب نثار نے کہا کہ خواجہ سلمان جو کچھ محکمہ صحت میں ہورہا ہے اسے نوٹ کرتے جائیں، یہی آپ کے خلاف چارج شیٹ بنے گی۔

ایڈووکیٹ جنرل پنجاب کی مداخلت پرسرزنش کرتے ہوئے چیف جسٹس نے ریمارکس دیے کہ باہر سے سفارشوں پر بھرتیاں کی جاتی ہیں، اسے نظر انداز نہیں کرسکتے، یہ قاضی اتنا کمزوز نہیں، معاملے کی تہہ تک جائیں گے۔

چیف جسٹس نے ریمارکس دیے کہ معاملہ نیب کو بھجواتے ہیں سب سامنے آجائے گا اور جو بھی ذمہ دار ہوگا اسے چھوڑیں گے نہیں۔

سپریم کورٹ نے اوورسیز پاکستانیز کمشنر پنجاب ممبربورڈ پی آئی سی افضال بھٹی کا نام ای سی ایل میں ڈالنے کا حکم دیتے ہوئے ڈی جی نیب لاہور کو معاملے کی انکوائری کے لیے طلب کرلیا۔

سپریم کورٹ نے ریمارکس دیے کہ معاملے کی تہہ تک جائیں گے، اسی لیے نیب کو بھجوایا جا رہا ہے، عدالت نے 28 اپریل کو تمام متعلقہ حکام کو دوبارہ طلب کرلیا۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں، مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں