The news is by your side.

Advertisement

غیر ملکی افواج افغانستان پر سے قبضہ ختم کرے، طالبان امیر

کابل : افغان طالبان کے نئے امیر ہیبت اللہ اخونزادہ نے جاری اپنے پہلے پیغام میں امریکا کو پیغام دیا ہے کہ وہ افغانستان کی سرزمین سے نکل جائے۔

غیر ملکی خبررساں ایجنسی کے مطابق  افغان امیر نے رمضان المبارک کے اختتام اورعید کے موقع پر جاری اپنے پیغام میں کہا ہے کہ ’’افغانستان میں موجود امریکا اور اس کے اتحادی حقائق کو تسلیم کرتے ہوئے جلد از جلد ہماری سرزمین پر سے قبضہ ختم کردیں اور افغانیوں کے خلاف طاقت کے استعمال کو ترک کر دیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ افغانستان کے عوام بہادر جو کسی سے خوفزدہ نہیں ہوتے،عوام اپنے وطن میں قابض افواج کی غلامی کسی بھی صورت قبول نہیں کریں گے بلکہ غلامی سے نجات حاصل کرنے کے لیے  لڑتے ہوئے مرجانے کو ترجیح دیں گے، طالبان امیر نے امریکا کو متنبہ کیا کہ افغانستان میں امریکی افواج کے قیام سے جہاد مزید تیز ہوگا، امریکا افغانستان کو فتح کرنے میں کبھی کامیاب نہیں ہوگا۔

مزید پڑھیں :      افغان طالبان کے نو منتخب امیرملا ہیبت اللہ اخوندزادہ کون ہیں؟

 ملا ہیبت اللہ کا کہنا تھا کہ افغانی قوم کو غلام بنانے والے ممالک کی حکمت عملی سے افغان جہاد میں کمی نہیں آسکتی کیونکہ اُن کی سازشیں کسی ایک گروپ یا دھڑے کے لیے نہیں بلکہ پوری قوم کو غلام بنانے کے لیے ہیں، افغانی عوام کی زندگیوں کا مقصد شہادت اور غلامی سے نجات حاصل کرنا ہے۔

پڑھیں :           القاعدہ کے سربراہ نے افغان طالبان کے نئے امیر کی بیعت کا اعلان کردیا

 واضح رہے نوشکی ڈرون حملے میں ملا اختر منصور کی امریکی ڈرون حملے میں ہلاکت کے بعد طالبان کی جانب سے ملا امیر کو نیا امیر مقرر کیا گیا ہے ، طالبان کی نجی ذیلی تنظیموں کے  سربراہان نے ہیبت اللہ کو امیر تسلیم کرتے ہوئے ان کے ہاتھ پر بیعت کرلی ہے۔
Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں