The news is by your side.

Advertisement

سوڈان: عبوری حکومت کے قیام کی کوشش، فوجی قیادت اور مظاہرین کے درمیان مذاکرات

خرطوم: سوڈان میں عبوری طور پر سول حکومت کے قیام کے لیے فوجی قیادت اور مظاہرین کے درمیان مذاکرات کا آغاز ہوگیا۔

تفصیلات کے مطابق سوڈان شدید سیاسی بحران کا شکار ہے، جبکہ ملک کے مختلف علاقوں میں فوجی اہلکاروں اور مظاہرین کے درمیان جھڑپوں کے نتیجے میں اب تک درجنوں شہری مارے جاچکے ہیں۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق سوڈان میں اس وقت فوجی قیادت برسراقتدار ہے، جنہوں نے اعلان کیا تھا کہ وہ جلد اقتدار سول سیاست دانوں تک منتقل کردیں گے جس پر اب تک عمل نہیں ہوا۔

فوجی قیادت اور احتجاجی تحریک کے رہنماؤں کے مابین مذاکرات کا دوبارہ آغاز ہو گیا ہے، احتجاجی مظاہرین کی ہلاکتوں کے سبب کئی ہفتوں کے تعطل کے بعد مذاکرات کا آغاز ہوا ہے۔

فوج کے تین جنرلوں اور اپوزیشن کے پانچ نمائندوں کے مابین ملکی دارالحکومت خرطوم میں ایک ملاقات ہوئی، اس دوران اہم امور پر تبادلہ خیال کیا گیا اور اقتدار کی منتقل کا لائحہ عمل بھی زیرغور آیا۔

امریکی نے سوڈان پر پابندی عائد کرنے کی دھمکی دے دی

واضح رہے کہ سوڈان کے دارالحکومت خرطوم میں اپریل میں ہونے والی فوجی بغاوت اور ملک میں 3 ماہ کے لیے ایمرجنسی کے نفاذ کے خلاف دھرنا دینے والوں پر براہ راست فائرنگ سے اب تک 100 سے زائد افراد ہلاک اور متعدد زخمی ہوگئے ہیں۔

جبکہ مختلف علاقوں میں مظاہروں کا سلسلہ بھی جاری ہے، فورسز اور مظاہرین کے درمیان جھڑپوں کے باعث اب تک متعدد شہری ہلاک ہوچکے ہیں جبکہ مزید ہلاکتوں کا بھی خدشہ ظاہر کیا گیا ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں