15.3 C
Ashburn
اتوار, مئی 19, 2024
اشتہار

لاہور میں پولیس اہلکاروں کی ٹارگٹ کلنگ کرنے والے ملزم سے متعلق انکشافات

اشتہار

حیرت انگیز

لاہور : صوبائی دارلحکومت لاہور میں پولیس اہلکاروں کی ٹارگٹ کلنگ کرنے والے ملزم سے متعلق انکشافات سامنے آئے۔

تفصیلات کے مطابق صوبائی دارلحکومت لاہور میں سب انسپکٹرسمیت 3 اہلکاروں کو قتل کرنیوالا فیضان سے پولیس کی تفتیش جاری ہے۔

ملزم فیضان کالعدم تنظیم کےسوشل میڈیانیٹ ورک کاحصہ تھا، فیضان نےمصری شاہ میں سب انسپکٹرکوقتل کرنے سے پہلے تصویر لی تھی۔

- Advertisement -

ملزم نے سب انسپکٹر کی تصویرسوشل میڈیا گروپ میں بھیج کراجازت مانگی تھی، یہ بھی انکشاف کیا کہ ملزم نےسوشل میڈیاگروپ میں کہاکہ ٹارگٹ دوپھولوں والا ہے۔

ملزم فیضان کوگروپ سے اجازت ملی توسب انسپکٹر کو شہید کردیا، سب انسپکٹرکی برگرشاپ پرموجودگی کی تصویر بھی سامنے آگئی۔

ملزم نے کانسٹیبل غلام رسول کے قتل سے پہلے بھی سوشل میڈیاگروپ پر اجازت لی تھی۔

گذشتہ روز لاہورمیں پولیس اہلکاروں کے قتل میں ملوث ملزم فیضان بٹ کا اعترافی بیان سامنے آگیا، جس میں کہا کہ سی ٹی ڈی نے پہلے غلط مقدمے میں ملوث کیا، جیل میں لشکرجھنگوی کے رؤف گجر سے ملاقات ہوئی جس نے میری ضمانت کرائی۔

ملزم فیضان کا بیان میں کہنا تھا کہرؤف گجر نے رہا کرا کر افغانستان کے علاقے خراسان بھجوا دیا، افغانستان میں عاصم نامی شخص سےملاقات ہوئی جس نے 6اہلکاروں کےقتل کاٹاسک دیا، مجھے کہا گیا 6 اہلکاروں کے قتل کے بعد تمہیں افغانستان بلا لیں گے۔

پستول ڈیرہ سے حاصل کیا، موٹر سائیکل شادباغ لاہور سے چھینی، موٹر سائیکل کا نمبر تبدیل کر کے پولیس اہلکاروں کو ٹارگٹ کیا۔

Comments

اہم ترین

ویب ڈیسک
ویب ڈیسک
اے آر وائی نیوز کی ڈیجیٹل ڈیسک کی جانب سے شائع کی گئی خبریں

مزید خبریں