The news is by your side.

Advertisement

اسکول ٹیچر کا طالب علم پر وحشیانہ تشدد، بازو توڑ دیا

ایمن آباد: پنجاب کے شہر گجرانوالہ میں سرکاری اسکول ٹیچر نے آٹھویں جماعت کے طالب علم پر وحشیانہ تشدد کرکے بازو توڑ دیا، اہلخانہ نے انتظامیہ سے نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق گجرانوالہ کے علاقے ایمن آباد میں سرکاری اسکول ٹیچر نے آٹھویں جماعت کے طالب علم کو وحشیانہ تشدد کا نشانہ بنایا جس سے طالب علم اصغر کا بازو ٹوٹ گیا۔

متاثرہ طالب علم اصغر کا کہنا ہے کہ وہ ٹیچر جنید سے پوچھ کر بخار کی وجہ سے دوائی لینے گیا لیکن جب وہ واپس آیا تو پریڈ تبدیل ہو چکا تھا اور ٹیچر شفیق سبحانی بچوں کو پڑھا رہے تھے، مجھے دیکھتے ہی وہ آگ بگولہ ہوگئے اور خوب تشدد کا نشانہ بنایا۔

طالب علم نے بتایا کہ جب وہ کلا س میں داخل ہوا تو ٹیچر شفیق سبحانی نے تھپڑوں، مکوں اور ڈنڈوں سے بدترین تشدد کا نشانہ بنانا شروع کر دیا جس سے اس کے بائیں بازو کی ہڈی ٹوٹ گئی۔

سرگودھا: ٹیچر کا 8 سالہ طالبہ پر تشدد، سر کے بال کاٹ دیے

علی اصغر کے مطابق وہ کلاس ٹیچر شفیق سبحانی کو کہتا رہا کہ اس کا بازو ٹوٹ گیا ہے لیکن اس کے باوجود وہ اسے تشدد کا نشانہ بناتے رہے، بچوں کے اہلخانہ نے محکمہ ایجوکیشن سے واقعے کا نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ہے۔

خیال رہے کہ اساتذہ کا طالب علموں پر تشدد کوئی نئی بات نہیں اس سے قبل بھی ملک کے مختلف شہروں میں اس طرح کے واقعات پیش آچکے ہیں، رواں سال اپریل میں صوبہ پنجاب کے شہر سرگودھا میں اسکول ٹیچر نے تیسری جماعت کی 8 سالہ طالبہ کو تشدد کا نشانہ بناتے ہوئے اس کے بال کاٹ دیے تھے۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں