site
stats
سندھ

حیدرآباد، استاد کا طالب علم پر وحشیانہ تشدد

hyderabad

حیدرآباد: سبق یاد نہ کرنے پر حیدرآباد کے استاد نے دوسری جماعت طالب علم کو وحشیانہ تشدد کا نشانہ بناڈالا۔

تفصیلات کے مطابق گورنمنٹ بوائز اسکول کے استاد معین قریشی نے سبق یاد نہ کرنے پر دوسری جماعت کے طالب علم کو وحشیانہ تشدد کا نشانہ بنایا۔

نمائندہ اے آر وائی نیوز زاہد کلہوڑو کے مطابق استاد نے بچے کو کہا کہ ’اگر گھر پر تشدد کے بارے میں کسی کو بتایا تو تمہاری دوبارہ اسی طرح پٹائی کروں گا‘۔

استاد کی دھمکی پر بچہ خاموشی سے گھر پہنچا مگر والدین نے جب بچے کے کپڑے تبدیل کروائے تو انہیں تشدد کے واضح نشانات نظر آئے۔

والدین نے بچے سے نشانات کے بارے میں دریافت کیا تو مذکورہ طالب علم نے بتایا کہ استاد معین قریشی نے سبق یاد نہ کرنے پر اسے مارا ہے۔

والدین کا احتجاج کرتے ہوئے کہنا تھا کہ ٹیچر نے سابق یاد نہ کرنے پر بیٹے کو وحشیانہ تشدد کا نشانہ بنایا، جس کے جسم پر نشانات موجود ہیں۔

والدین نے اعلیٰ حکام سی اپیل کی ہے کہ وہ واقعہ کی انکوائری کرواتے ہوئے ٹیچر کو قانون کے مطابق سخت سے سخت سزا دیں۔


یہ پڑھیں: استاد کا سبق یاد نہ کرنے پر آٹھویں جماعت کے طالب علم پر وحشیانہ تشدد


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔

 

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top