The news is by your side.

لیگی رہنما جاوید لطیف پر مقدمہ درج کروانے والا مدعی سامنے آگیا

ن لیگی رہنما اور وفاقی وزیر جاوید لطیف کے خلاف لاہور میں دہشتگردی ایکٹ کے تحت مقدمہ درج کرانے والا مدعی قاری ارشاد الرحمٰن سامنے آگیا ہے۔

اے آر وائی نیوز کے مطابق لاہور میں گزشتہ دنوں ن لیگی رہنما اور وفاقی وزیر جاوید لطیف کے خلاف دہشتگردی ایکٹ کے تحت مقدمہ درج کرانے والے قاری ارشاد الرحمٰن منظر عام پر آگئے ہیں اور انہوں نے متنبہ کیا ہے کہ اگر ملزمان گرفتار نہ ہوئے تو ساتھیوں سمیت احتجاجی دھرنا دوں گا۔

قاری ارشاد الرحمٰن نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ عمران خان نے دنیا میں اسلامو فوبیا کے خلاف آواز بلند کی اور لیگی رہنماؤں کی حرکت سے لوگوں کے جذبات مجروح ہوئے ہیں۔

مقدمے کے مدعی قاری ارشاد کے وکیل ایڈووکیٹ علی احمد ڈوگر نے کہا کہ سرکاری ادارے عوام کے ٹیکسوں سے چلتے ہیں اور سرکاری وسائل کسی کے خلاف استعمال نہیں کیے جاسکتے۔

واضح رہے کہ جاوید لطیف کے خلاف گزشتہ پیر کو مقدمہ امام مسجد ارشاد الرحمٰن کی مدعیت میں تھانہ گرین ٹاؤن میں درج کیا گیا تھا جس میں پی ٹی آئی چیئرمین عمران خان کے خلاف غلط بیانی کرکے اشتعال دلانے کا الزام عائد کیا گیا ہے۔

یہ بھی پڑھیں: وفاقی وزیر جاوید لطیف پر دہشتگردی ایکٹ کے تحت مقدمہ درج

ایف آئی آر کے مطابق وفاقی وزیر جاوید لطیف نے وزیر اطلاعات اور نشریات مریم اورنگزیب ودیگر سے مشورہ کرکے منصوبے کے تحت پریس کانفرنس کی اور پاکستان ٹیلی ویژن کے اعلیٰ حکام نے انہیں اس سلسلے میں مکمل معاونت فراہم کی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں